ہنگری: نئے قانون نے فٹ پاتھ پر سونا جرم بنا دیا -
The news is by your side.

Advertisement

ہنگری: نئے قانون نے فٹ پاتھ پر سونا جرم بنا دیا

بوڈاپسٹ: ہنگری کے آئین نے بے گھری اور سڑکوں پر سونے کو جرم قرار دے دیا، آئین اب کہتا ہے کہ راستوں میں سونا ایک جرم ہے۔

تفصیلات کے مطابق قانون کی یہ نئی شق پیر سے نافذ العمل ہو گئی ہے، شق میں کہا گیا ہے کہ عوامی مقامات پر مستقبل رہائش اختیار کرنے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

بے گھر افراد جرمانہ ادا نہیں کر سکے تو جیل جانا پڑے گا

نئے قانون نے پولیس کو اختیار دے دیا ہے کہ گلیوں اور سڑکوں پر سونے والوں کو ہٹا دیں اور ان کی اشیا ضبط کر لی جائیں۔

قانون میں شامل ترمیمی شق کے مطابق وہ بے گھر لوگ جو شیلٹر جانے سے انکار کریں، انھیں مفادِ عامہ کے کاموں میں شریک کرنے کے لیے مجبور کیا جائے گا۔

شق میں مزید کہا گیا ہے کہ مفادِ عامہ کے کاموں سے بچنے کے لیے انھیں جرمانہ ادا کرنا پڑے گا، جرمانہ ادا نہیں کر سکے تو جیل جانا پڑے گا۔

سماجی معاملات کے وزیر اٹیلا فولوپ نے نئے قانون کے حوالے سے کہا کہ یہ معاشرے کے مفاد میں لایا گیا ہے، بے گھر لوگوں کے لیے ادارے اپنا کام کر رہے ہیں۔


یہ بھی پڑھیں:  مسلمان پناہ گزینوں کی آبادکاری کے خلاف ہنگری کی حکمران جماعت آئین میں ترمیم کرے گی


دوسری طرف نئے قانون پر تنقید بھی کی گئی ہے، اور اسے ہنگری کے وزیرِ اعظم وکٹر اوربن کے ملک کے کم زور لوگوں کے خلاف کریک ڈاؤن کا حصہ قرار دیا گیا۔

اقوام متحدہ کے ایک مندوب کا کہنا ہے کہ اس قانون سے احساس اجاگر ہوتا ہے کہ حکومت بے گھر لوگوں کے ساتھ ظالمانہ اور غیر انسانی رویہ رکھتی ہے اور سمجھتی ہے کہ بے گھری جرم کے برابر ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں