The news is by your side.

Advertisement

میٹرک کا رزلٹ : شربت بیچنے والے بچے نے کامیابی کے جھنڈے گاڑھ دیئے

ملتان : لگن اگر سچی ہو تو کوئی کام مشکل نہیں رہتا اس مثال کو ملتان کے محمد حذیفہ نے سچ کر دکھایا، میٹرک میں نمایاں نمبروں سے کامیابی حاصل کرنے والا نوجوان شربت کی ریڑھی پر کام کرنے پر مجبور ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملتان کے غریب ہونہار طالب علم محمد حذیفہ کی مسکراتی ہوئی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی، تصویر میں حذیفہ کو شربت کی ریڑھی پر ملازمت کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔

ملتان سے اے آر وائی نیوز کے نمائندے طاہر خان نے16سالہ محمد حذیفہ سے خصوصی ملاقات کی اور حذیفہ سے اس کی زندگی کے بارے میں تفصیلاً گفتگو کی۔

حذیفہ نے بتایا کہ اس نے گزشتہ سال میٹرک میں1100 میں سے1050 نمبر حاصل کرکے اسکول بھر میں پہلی پوزیشن حاصل کی تھی جس کی بنیاد پر اسے وظیفہ کے طور پر کالج میں مفت داخلہ بھی مل گیا تھا۔

نمائندہ اے آر وائی بات چیت کرتے ہوئے حذیفہ نے مزید بتایا کہ کالج میں پڑھائی کے ساتھ ساتھ کام بھی کررہا ہوں اور اس سے قبل میٹرک بھیئ ایسے ہی کام کرتے ہوئے کیا۔

حذیفہ ہی اپنے گھر کا واحد سہارا ہے اور اس کے چار چھوٹے بہن بھائی ہیں جن کا گھر اس کی محنت کی کمائی سے چلتا ہے، ملتان میں شربت کی ریڑھی پر مزدوری کرنے والے ہونہار طالب علم کا خواب ہے کہ وہ ڈاکٹر بنے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں