The news is by your side.

Advertisement

حیدرآباد، چپس کھانے سے 3 سالہ بچہ جاں بحق، بہن کی حالت تشویش ناک

حیدرآباد:سندھ کے شہر حیدرآباد کی چاندنی مارکیٹ میں مبینہ طور پر چپس کھانے سے تین سال کا بچہ جاں بحق ہوگیا جبکہ بہن کی حالت تشویشناک ہے۔

تفصیلات کے مطابق حیدرآباد کی چاندنی مارکیٹ میں مبینہ طور پر چپس کھانے سے 3 سالہ بچہ ہمایوں جاں بحق ہوگیا جبکہ ڈھائی سالہ بہن علیزہ تشویش ناک حالت میں نجی اسپتال میں زیر علاج ہے۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز ناصر حسن کے مطابق بچوں کے والد کا کہنا ہے کہ چپس کھانے سے بچوں کی حالت بگڑی اور ڈاکٹروں نے بچوں کا اسٹمک واش نہیں کیا اور ایک بچے کی ہلاکت کے بعد جواب دے دیا جس کے بعد بچی کو تشویش ناک حالت میں دوسرے اسپتال منتقل کیا گیا۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز کے مطابق فوڈ اتھارٹی کی جانب سے ابھی تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے جبکہ اس سے قبل بھی حیدرآباد میں فوڈ اتھارٹی کی جانب سے کوئی خاص کارروائی عمل میں نہیں لائی جاتی ہے۔

بچوں کے والد کا کہنا ہے کہ دونوں کمسن بہن بھائی نے بازار سے چپس خرید کر کھائے تھے، اسپتال کی طبی رپورٹ میں زہر خورانی کی تصدیق ہوگئی ہے۔

ڈی آئی جی حیدرآباد نعیم شیخ نے متعلقہ دکانیں سیل کرنے کا حکم دیتے ہوئے معاملے کی تحقیقات کے لیے تین ٹیمیں تشکیل دے دیں۔

آئی جی سندھ سید کلیم امام نے چپس کھانے سے بچے کی موت کے واقعے نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی حیدرآباد سے انکوائری رپورٹ طلب کرلی ہے۔

مزید پڑھیں: بچوں کی موت ہوٹل کا کھانا کھانے سے ہی ہوئی، فرانزک رپورٹ میں تصدیق

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ کراچی کے علاقے کلفٹن کی زمزمہ اسٹریٹ پر واقع ریسٹورنٹ میں دو بچے مضر صحت کھانا کھانے سے جاں بحق ہوگئے تھے، بچوں کی والدہ کو بھی تشویش ناک حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں