The news is by your side.

Advertisement

‏’ماحولیات کا محکمہ ملا تو لگا مجھے سزا دی گئی ہے‘‏

ترجمان سندھ حکومت بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے کہا ہے کہ مجھے جب ماحولیات کامحکمہ ملاپہلے ‏سمجھا کہ یہ مجھے سزا دی گئی ہے۔

کراچی میں ماحولیات کے حوالے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ ‏ماحولیاتی چیلنجز کا مقابلہ زندہ قوم کی حیثیت سے کرنا ہے گلوبل وارمنگ کومیں گلوبل وارننگ ‏کہتاہوں۔

مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ ماحولیاتی بہتری کیلئےسنجیدگی کی جتنی ضرورت آج تھی پہلے کبھی نہ ‏تھی، سب مکتبہ فکرماحولیاتی تبدیلیوں کی وجہ سے مسائل کا شکار ہیں۔ ‏

انہوں نے کہا کہ مجھے جب ماحولیات کامحکمہ ملاپہلے سمجھاکہ یہ مجھے سزادی گئی ہے ‏جوترجیح ہم دیگر محکموں کو دیتے ہیں اتنی ماحولیات کو نہیں دیتے، کراچی یونیورسٹی میں لگے ‏قدیم درختوں کو ہم محفوظ بنارہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ لوگ درخت لگائیں ہم مفت پودے دیں گے، پلاسٹک بیگ پرپابندی کاقانون 2014 ‏سے موجود ہے تھیلی نالے کوچوک کرتی ہےکہیں نہ کہیں پریشان کرتی ہے، ہم بچوں کی مدد سے ‏‏11لاکھ پودے لگاسکتےہیں، درخت لگانےسے ماحول بہتر،ماحولیاتی تبدیلی کے اثرات سے بچا جا ‏سکے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں