site
stats
پاکستان

اگر میں وزیراعظم ہوتا تو ڈرون حملے کی اجازت نہیں دیتا، عمران خان

اسلام آباد: تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ نوازشریف کو ڈرون حملے کے خلاف آواز اٹھانی چاہیے تھی اگر میں وزیراعظم ہوتا تو کسی صورت ڈرون حملوں کی اجازت نہیں دیتا، ملک کا سربراہ ٹھیک ہوگا تو معاملات خود صحیح ہوجائیں گے۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے سوال کیا کہ کیا نوازشریف کو مینڈیٹ منی لانڈرنگ کے لیے دیا گیا تھا؟ اب جب حکمران قانون کے نرغے میں آگئے تو کہتے ہیں کہ اگر فیصلہ اُن کے بر خلاف آیا تو قوم نہیں مانے گی، جے آئی ٹی نے عدالت میں درخواست دی کہ تفتیش میں رکاوٹیں کھڑی کی جارہی ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ  وزیراعظم جے آئی ٹی کی تفتیش مکمل ہونے تک استعفیٰ دیں اور بچوں کے سرپر ہاتھ رکھ کر بتائیں کہ قطری خط فراڈ نہیں ہے، اگر نوازشریف نے ایسا کیا تو مان جاؤں گا کہ قطری خط سچ و حقیقت ہے۔

پڑھیں: کرم ایجنسی، امریکی ڈرون حملہ، 2 ہلاک، عمران خان کی مذمت

تحریک انصاف کے چیئرمین نے کہا کہ جب ملک کا سربراہ ٹھیک ہوگا تو ادارے بھی ٹھیک ہوں گے، جو ادارے کام کرنا چاہتے ہیں حکمران اُن پر انگلیاں اٹھانا شروع کردیتے ہیں، جے آئی ٹی کو یقین دلاتا ہوں کہ قوم اُن کے ساتھ ہے۔

مزید پڑھیں: ڈرون حملے پاکستانی وقار کے خلاف ہیں، آرمی چیف

عمران خان نے مزید کہا کہ امریکا نے پارا چنار میں ڈرون حملہ کیا جو وفاقی حکومت کا ماتحت علاقہ ہے، ڈرون حملے کا معاملہ وزیراعظم کو اٹھانا چاہیے تھا مگر ایسا نہیں ہوا، اگر میں وزیراعظم ہوتا تو ڈرون حملے کی کسی صورت اجازت نہیں دیتا، خیبرپختونخواہ میں ڈرون حملہ ہوا تو تحریک انصاف نیٹو سپلائی بند کردی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top