The news is by your side.

Advertisement

‏’پاکستان سے افغان امن عمل پر تعاون جاری دیکھنا چاہتے ہیں‘‏

امریکی وزیر خارجہ ٹونی بلنکن نے کہا ہے کہ افغان امن عمل پر پاکستان سے تعاون جاری دیکھنا ‏چاہتے ہیں۔

امریکی وزیرخارجہ ٹونی بلنکن نے ٹوئٹ میں لکھا کہ پاکستانی وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی سے ‏ٹیلیفونک رابطہ ہوا ہے پائیداراوردو طرفہ تعلقات کی خواہش پرشاہ محمودکوفون کیا۔

امریکی وزیرخارجہ نے لکھا کہ پاکستان کے ساتھ پائیدار اور مستحکم دوطرفہ تعلقات چاہتے ہیں ‏اور افغان امن عمل پر تعاون جاری دیکھنا چاہتے ہیں۔

ٹونی بلنکن نے کہا ہے کہ کورونا سے نمٹنے، علاقائی استحکام اور دیگر اہم امور کا منتظرہوں۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ٹونی بنلکن سے رابطے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ دوران ‏گفتگودو طرفہ تعلقات اورعلاقائی صورتحال پرتبادلہ خیال، اقتصادی تعاون اور علاقائی روابط کے ‏فروغ پر بات چیت کی گئی۔

شاہ محمودقریشی نے کہا کہ علاقائی امن کیلئےتعاون پرمحیط،وسیع البنیادتعلقات کیلئےپرعزم ہیں ‏تجارت،سرمایہ کاری،اقتصادی تعاون کےفروغ کےخواہاں ہیں۔

ان کے مطابق امریکی مالی تعاون سےوسط ایشیابراستہ افغانستان رابطےجوڑنے پر بھی بات چیت ‏ہوئی، علاقائی امن واستحکام کیلئےمربوط مذاکرات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ افغان ‏امن کیلئےدونوں ممالک کےنکتہ نظرمیں مماثلت خوش آئندہے امریکاکیساتھ بااعتمادشراکت دار کے ‏طور پر مخلصانہ کاوشوں کیلئےپرعزم ہیں۔

شاہ محمودقریشی کا کہنا تھا کہ افغانستان سےغیرملکی افواج کےانخلاسےامن عمل کو مدد ‏ملےگی، امن کاقیام افغان قیادت،علاقائی وعالمی متعلقین کی مشترکہ ذمہ داری ہے متعلقین پرذمہ ‏داری ہے جامع مذاکرات کےذریعےمسئلہ حل کریں، متعلقین افغان مسئلےکےسیاسی حل کی ‏ضرورت پر زور دیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں