The news is by your side.

Advertisement

قانون کی خلاف ورزی کرنے والے پرائیوٹ اسکولز کی رجسٹریشن منسوخ کی جائے گی، وزیرتعلیم سندھ

کراچی: صوبائی وزیر تعلیم سندھ سردار شاہ نے کہا ہے کہ تعلیمی بہتری کے لیے سماجی شعور کے ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں، اساتذہ کی بھرتیوں کی پالیسی پر نئے سرے سے جائزہ لے رہے ہیں، سپریم کورٹ کے احکامات اور 2002 کے قوانین کی خلاف ورزی کرنے والے پرائیوٹ اسکولز کی رجسٹریشن منسوخ کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم سندھ کی جانب سے صوبے میں تعلیم کی بہتری کے لیے سول سوسائٹی سے تجاویز لینے کے مقصد کے ساتھ حیدرآباد کے بعد آج کراچی میں دوسری مشاورتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا۔

مشاورتی ورکشاپ میں سندھ اسمبلی کے قائد حزب اختلاف فردوس شمیم نقوی، ممبران سندھ اسمبلی مہتاب اکبر راشدی، شہریار مہر، ندا کھوڑو، تنزیلہ قمبرانی، قاسم سومر سمیت تعلیمی شخصیات، صحافیوں اور سول سوسائٹی کے نمائندگان نے شرکت کی۔

اس موقع پر شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے وزیرتعلیم کا کہنا تھا کہ تعلیم کے حوالے سے  پوائنٹ اسکورنگ کو ختم کرنے کی ضرورت ہے، ہمارے لیے چیلیجنگ صورتحال یہ ہے کہ ہمارے پاس بیالیس ہزار اسکول سسٹم میں موجود ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ 39 ہزار پرائمری جبکہ 3 ہزار سیکنڈری ہائی اسکول ہیں۔ وزیر تعلیم سید سردار علی شاہ کا کہنا تھا کہ محکمہ تعلیم میں بہت بہتری کی گنجائش ہے اور اس کے لیے حکومت تنہاء کچھ نہیں کرسکتی بلکہ سب کو  اپنا سماجی کردار ادا کرنا ہوگا۔

مزید پڑھیں: تمام نجی اسکولوں کا معائنہ کیا جائے تو 90فیصد رجسٹریشن سے محروم ہوجائیں گے: وزیرتعلیم سندھ

وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ تعلیم کی بہتری کے لیے حکومتی اراکین اور وزراء کو مدعو نہیں کیا بلکہ ہم نے اپوزیشن اور سول سوسائٹی سمیت تمام مکاتب فکر کو بلا کر اُن سے تجاویز لیں اور اب انہیں تعلیمی ایکشن پلان کا حصہ بنائیں گے۔

ورکشاپ کے اختتام پر وزیر تعلیم سید سردار شاہ نے میڈیا بریفنگ دی اور کہا کہ’ آج مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے پانچ گھنٹے تعلیمی پالیسی کے حوالے سے اپنی تجاویز اور آراء پیش کیں، جن کو ہم جائزہ لینے کے بعد اپنی تعلیمی پالیسی کا حصہ بنائیں گے‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’ہم نے اپنے روڈ میپ ایکشن پلان کو تین حصوں رسائی، معیار، اور بہترحکمرانی میں تقسیم کیا، اس حوالے سے مزید بہتری کے لیے آج کافی بہتر تجاویز سامنے آئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں سب کو مل کر تعلیمی نظام کی بہتری کا بیڑہ اٹھانا ہوگا، ہم نے تعلیمی میدان میں موجود عیب نہیں چھپائے بلکہ اپنی خامیوں کو دل سے تسلیم کیا۔

سردار شاہ نے مزید کہا کہ چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو صاحب کی اولین ترجیح صوبے میں تعلیم اور صحت کی سہولیات کی بہتری ہے اور ہم اس پر دن و رات محنت کر رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: اضافی فیسوں کی وصولی کا معاملہ، دو مزید نجی اسکولوں کی رجسٹریشن معطل

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ متعلقہ ایجوکیشن افسر سمیت تمام اسامیوں کی بھرتیوں کے لیے بنائے گئے ریکروٹمنٹ رولز کا نئے سرے سے جائزہ لے رہے ہیں۔

سردار شاہ کا کہنا تھا کہ پرائیویٹ اسکولز مالکان کو ماورائے قانون کسی اقدام کی اجازت نہیں دینگے، سپریم کورٹ کے احکامات اور 2002 کے قوانین کی کوئی بھی خلاف کرنے والے پرائیویٹ اسکول کی رجسٹریشن کینسل کی جائے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں