The news is by your side.

Advertisement

مولانا کا پلان اے کامیاب تھا تو پلان بی کیوں منتخب کیا؟ شوکت یوسفزئی

پشاور: صوبہ خیبر پختونخوا کے وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی کا کہنا ہے کہ اگرمولانا صاحب کا پلان اے کامیاب تھا تو پلان بی کیوں منتخب کیا؟

تفصیلات کے مطابق پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی نے کہا کہ مولانا صاحب کا اگر پلان اے کامیاب ہوا تو بی اور سی کیوں دیا؟

شوکت یوسفزئی نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان پریشان ہیں، سینیٹ انتخاب میں اپوزیشن کا ووٹ ہمیں پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کوسنجیدہ نہیں لیا کریں، اگران کا پلان اے کامیاب تھا تو پلان بی کیوں منتخب کیا؟

انہوں نے کہا کہ مولانا کہتے ہیں میں خالی ہاتھ نہیں آیا، مولانا کے 2 مقاصد تھے اس میں کامیاب ہوئے، وہ چاہتے تھے کرپشن میں ملوث لوگوں کو باہر نکالا جائے، دوسرا مقصد کشمیر کاز کوخاموش کرنا تھا۔

یاد رہے کہ تین روز قبل معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ مولانا استعفیٰ لینے آئے تھے اور گزارا صرف تسلیوں پر کرنا پڑا، مولانا نے پارلیمان کی ایک سیٹ کے لیے سیاسی رسوائی اٹھائی۔

فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے عوام نے آپ کو مسترد کردیا، عوام لشکر کشی اور انتشاری سیاست کے خلاف ہیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں