اگرچاند اچانک دھماکے سے پھٹ جائے تو؟ -
The news is by your side.

Advertisement

اگرچاند اچانک دھماکے سے پھٹ جائے تو؟

سائنسدانوں نے ایک سائنس فکشن ناول سے متاثرہوکریہ جاننے کی کوشش کی ہے کہ اگرچاند ایک دھماکے سے پھٹ جائے تو زمین پر اس کے کیا اثرات مرتب ہوں گے اورنتائج کچھ اچھے نہیں ہیں۔

گزشتہ سال ایک سائنس فکشن ناول ’سیون ایوز‘ میں یہ منظرنامہ پیش کیا گیا تھا کہ چاند بغیرکسی وارننگ اوروجہ کے اچانک دھماکے سے پھٹ جاتا ہے، جسے پڑھ کرسائنسدانوں نے حقیقت میں اس قسم کی صورتحال کے حوالے سے ایک مفروضہ پیش کیا ہے۔اگر واقعی چاند پھٹ جاتا ہے تو زمین پر رہنے والے کسی بھی جاندار کے لیے یہ سب کچھ اچھا ثابت نہیں ہوگا۔

درحقیقت چاند پھٹنے کی صورت میں آگ کے شعلوں سےلپٹا ملبہ زمین پر آکر گرنا شروع ہوجائے گا۔ یہ ملبہ ہزاروں برس تک زمین پر گرتا رہے گا اور زمین کی سطح پر موجود لگ بھگ ہر قسم کی زندگی کا خاتمہ ہوجائے گا۔

چاند پھٹنے کی صورت میں اس کے ٹکڑے ایک دوسرے سےمسلسل ٹکراتے رہیں گے اور چھوٹے سے چھوٹے ہوتے چلے جائیں گے جس سے زمین کے گرد ملبے کا انتہائی بڑا اجتماع اکھٹا ہوجائے گا۔

بہت جلد یہ ٹکڑے زمین کی سطح پر گرنا شروع ہوجائیں گے، تو یہ آگ سے بھرپور بمبارہرچیزکوجلانا شروع کردیں گے۔ یہاں تک کہ یہ ٹکڑے سمندروں کو بھی بخارات بنا کر اڑا دیں گے۔ اپنی بقاء کے لیے انسانوں کو ہزاروں برس کے لیے خلاءمیں رہنا پڑے گا۔

چاند پھٹنے کا امکان صرف اسی صورت میں ہے جب کوئی سیارہ آکر اس سے ٹکرا جائےجس سے زوردار دھماکا ہولیکن خوش قسمتی سے یہ لگبھگ ناممکن ہے کہ چاند اچانک دھماکے سے پھٹ جائے، لہذا اطمینان رکھیے کیونکہ یہ فی الحال محض ایک مفروضہ ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں