آئی جی سندھ نے دینی مدارس کے لیے اصلاحات متعارف کرادیں sindh
The news is by your side.

Advertisement

آئی جی سندھ نے دینی مدارس کے لیے اصلاحات ترتیب دے دیں

کراچی : آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے کہا ہے کہ مدرسے کے قیام سے قبل حکومت کی اجازت لازمی لینا ہوگی اور مدرسہ کے نصاب، اساتذہ، معلمین، طلبہ اور اسٹاف کی تفصیلات فراہم کرنا ضروری ہوگا.

تفصیلات کے مطابق آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کی زیرصدارت ہونے والے اہم اجلاس میں دینی مدارس میں اصلاحات متعارف کرانے سے متعلق امورکا جائزہ لیا گیا اور اصلاحاتی سفارشات پر مبنی مسودہ ترتیب دینے کا فیصلہ کیا گیا جسے منظوری لیے حکام بالا کے پاس بھیجا جائے گا.

آئی جی سندھ کا کہنا تھا کہ دینی مدارس میں اصلاحات کے لیے جو سفارشات دی گئی ہیں اُس کے تحت سرکاری اراضی پر مدرسے کا قیام حکومت کی اجازت سے مشروط ہوگا اور مدارس کی رجسٹریشن کے لیے اجازت نامہ رجسٹرار ڈویڑنل کمشنر جاری کرے گا اور اس کی تصدیق متعلقہ ڈپٹی کمشنر کی ذمہ داری ہوگی.

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے کہا کہ مدرسے کے قیام کے اجازت نامے سے پہلے ذرائع آمدن اور مالی امداد کرنے والوں کی تفصیل دینا لازمی ہوگی جب کہ مہتمم مدرسے کے قومی شناختی کارڈ کی تصدیق شدہ کاپی، رابطہ نمبر، مدرسے کا نصاب، اساتذہ، معلمین،طلبہ اور اسٹاف کےکوائف بھی لازماً جمع کرانا ہوں گے.

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ مدارس میں ہونے والی سرگرمیوں کو بھی مانیٹر کیا جائے گا اور واچ لسٹ اقدامات کی ذمہ داری ضلعی ایس ایس پی کی ہوگی جو بذات خود مدارس کی کڑی نگرانی کوغیرمعمولی بنائے گا اور ان اقدامات کو عملہ جامہ پہنانے کا ذمہ دار ہوگا.

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں