The news is by your side.

Advertisement

الیکشن کمشنر کے دفتر میں ہنگامہ آرائی، آئی جی سندھ کی طلبی

کراچی: الیکشن کمشنر سندھ کے دفتر میں سیاسی کارکنوں کی ہنگامہ آرائی پر کمشنر نے آئی جی سندھ کو دفتر طلب کر کے سیکورٹی کی ناقص صورت حال پر برہمی کا اظہار کیا۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمشنر سندھ کے دفتر میں ہنگامہ آرائی کے وقت وہاں پولیس اہل کاروں کی مطلوبہ تعداد کم ہونے پر الیکشن کمشنر نے فوری نوٹس لے لیا۔

الیکشن کمشنر سندھ یوسف خٹک نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو طلب کر کے سخت سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن کی آمد آمد ہے اور سیکورٹی کا یہ حال ہے، پولیس مطلوبہ تعداد میں یہاں کیوں موجود نہیں تھی؟

انھوں نے سندھ پولیس کو حکم دیا کہ وہ الیکشن کمیشن دفاتر کی سیکورٹی بڑھائے، اگر دوبارہ ایسی صورت حال پیش آئی تو سخت ترین ایکشن لیا جائے گا۔

آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے گزشتہ روز کی صورت حال پر معذرت کرتے ہوئے کہا الیکشن کمیشن اور دیگر انتخابی دفاتر پر سیکورٹی بڑھائی جارہی ہے، پولیس اور الیکشن کمیشن مل کر انتظامات کو بہتر بنائیں گے۔

الیکشن کمیشن کے فیصلے جانب دار نہیں ہوتے، الیکشن کمشنر سندھ یوسف خٹک


دریں اثنا الیکشن کمشنر سندھ محمد یوسف خٹک نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آئی جی سندھ کے دورے کا مقصد ذمہ داری یاد دلانا تھا، انھوں نے کل نفری کی تعیناتی نہ ہونے پر معذرت کی۔

ان کا کہنا تھا کہ خواتین پولیس اہل کاروں کی تعیناتی کی یقین دہانی بھی اب کرائی گئی ہے، انھوں نے ہنگامہ آرائی کے حوالے سے کہا کہ الیکشن کے انعقاد میں کسی سیاسی پارٹی کا دباؤ قبول نہیں کیا جائے گا، سیاسی جماعتوں کو چاہیے کارکنوں کی تربیت کریں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں