The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف اورنیب کی درخواستوں پرسماعت اٹھارہ فروری کے لیے مقرر

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ نے العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ ریفرنسز میں نوازشریف اور نیب کی درخواستیں سماعت کے لیے مقرر کردیں۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں سابق وزیراعظم نوازشریف کی العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں سزا معطلی اور نیب کی اپیل کی درخواستوں پرسماعت ہوئی۔

عدالت میں سماعت کے دوران خواجہ حارث کے معاون وکیل منوردگل نے استدعا کی کہ ہم گواہوں اور پراسیکیوشن کا پیش کردہ مصدقہ ریکارڈ جمع کرانا چاہتے ہیں۔

جسٹس عامرفاروق نے کہا کہ آپ کا پہلے سے ہی 18 فروری کوکیس مقررہے۔

وکیل منور دگل نے کہا کہ جی مجھے معلوم ہے لیکن عدالت کومزید دستاویزات جمع کرانی تھیں، پہلے نوازشریف کی اضافی دستاویزات پررجسٹرارآفس کے اعتراضات تھے۔

انہوں نے کہا کہ کچھ دستاویزات کلیئرنہیں تھیں اس لیے ساتھ جمع نہیں کراسکے، اب مجوزہ دستاویزات کوعدالت ساتھ منسلک کرنے کی اجازت دے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے نوازشریف کی سزا معطلی درخواست میں اضافی دستاویزات پیش کرنے کی درخواست منظور کرلی۔

عدالت نے العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ ریفرنسز میں نوازشریف اور نیب کی درخواستوں پر سماعت 18 فروری کے لیے مقرر کردی۔

یاد رہے کہ 21 جنوری کو اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیراعطم نوازشریف کی العزیزیہ ریفرنس میں اپیل اورسزا معطلی کی درخواست پر نیب کونوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کیا تھا۔

ایون فیلڈریفرنس: نوازشریف ،مریم نواز کی سزا معطلی کے خلاف نیب کی اپیل مسترد

واضح رہے گزشتہ سال 24 دسمبر کو سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز اور فلیگ شپ ریفرنسز کا فیصلہ سنایا گیا تھا، فیصلے میں نواز شریف کو العزیزیہ ریفرنس میں مجرم قرار دیتے ہوئے گرفتار کیا گیا تھا جبکہ فلیگ شپ ریفرنس میں انہیں بری کردیا گیا تھا۔

بعدازاں ان کی درخواست پر انہیں راولپنڈی کی اڈیالہ جیل کے بجائے لاہور کی کوٹ لکھپت جیل منتقل کیا گیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں