The news is by your side.

Advertisement

شہزاد اکبر کی تعیناتی کے خلاف درخواست خارج

اسلام آباد : ہائی کورٹ نے مشیر برائے احتساب مرزاشہزاد اکبر کی تعیناتی کے خلاف درخواست خارج کردی، عدالت نے گزشتہ سماعت پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے مشیر برائےاحتساب مرزاشہزاداکبر کی تعیناتی کےخلاف درخواست 9 صفحات پر مشتمل حکم نامہ جاری کردیا۔

عدالت نے ابتدائی سماعت کے بعد مشیر برائےاحتساب مرزاشہزاداکبر کی تعیناتی کے خلاف درخواست خارج کردی۔

مشیر برائےاحتساب مرزاشہزاداکبرکی تعیناتی کے خلاف درخواست دائرکی گئی تھی اور عدالت نے گزشتہ سماعت پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

شہری پرویز ظہور کی جانب سے وکیل امان اللہ کنرانی نے کہا تھا کہ جولائی کو شہزاد اکبر کو داخلہ اور احتساب کا مشیر مقرر کیا گیا، احتساب ایک آزاد ادارہ ہے وہ کسی کے ماتحت نہیں ہے، رولز آف بزنس نے احتساب کے ادارے کو آزاد رکھا ہوا یے۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ کا کہنا تھا کہ اب کیا ایسی چیز ہوئی کہ خدشہ پیدا ہو گیا کہ وہ نیب میں مداخلت کر ریے ہیں؟ یہ عدالت ڈکلئیر کر چکی ہے کہ شہزاد اکبر وفاقی حکومت نہیں ہیں ، محض ایک نام رکھ دینے سے کسی کی مداخلت ثابت تو نہیں ہو جاتی، آئینی طور پر وزیراعظم کسی کو بھی مشیر رکھ سکتا یے۔

یاد رہے احتساب اور داخلہ امور سے متعلق وزیر اعظم کے مشیر شہزاد اکبر کو کام سے روکنے اور ان کی تعیناتی کو کالعدم قرار دینے کے لیے شہری پرویز ظہور نے درخواست دائر کی تھی۔

جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ شہزاد اکبر کی بطور مشیر تعیناتی نہ صرف خلاف قانون ہے بلکہ ایسا غیر قانونی اقدام اٹھا کر وزیر اعظم نے بھی اپنے حلف کی خلاف ورزی کی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں