The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف کےخلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی

اسلام آباد : اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی کردی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروقی نے نا اہل وزیراعظم نوازشریف کے خلاف توہین عدالت اور تقاریر پر پابندی کی درخواست پرسماعت کی۔

جسٹس عامر فاروق نے دوران سماعت ریمارکس دیے کہ اسی طرح کی درخواست لاہور ہائی کورٹ میں بھی زیرسماعت ہے، پہلے لاہور ہائی کورٹ کے احکامات کا انتظار کرلیتے ہیں۔

بعدازاں عدالت نے نوازشریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی کردی۔

سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف دائر درخواست میں سیکریٹری اطلاعات اور چیئرمین پیمرا کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گزار مخدم نیاز کا کہنا ہے کہ نوازشریف نے ججز کی کردار کشی کو اپنا وتیرہ بنایا ہوا ہے، عدالت سے استدعا ہے کہ نا اہل وزیراعظم کی تقاریر پر آئینی طور پر پابندی لگائی جائے۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نواز شریف نااہلی کے بعد عدالتوں کے خلاف زہرافشانی کررہے ہیں، انہیں توہین عدالت میں سزا دی جائے اورآرٹیکل 63 ون جی کے تحت بھی نا اہل کیا جائے۔


کسی سے نہیں ڈرتا عوام کی خدمت کرنا جانتا ہوں، نواز شریف


خیال رہے کہ دوروز قبل شیخوپورہ میں سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ امپائر کی انگلی والوں کو رخصت کرنے کا وقت آگیا ہے، 2018 کے الیکشن میں عوام انہیں خدا حافظ کہہ دیں گے، ہم پیچھے ہٹنے والے نہیں فولادی ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں