site
stats
پاکستان

نوازشریف کو یہ حق نہیں وہ فردجرم کوچیلنج کریں، تفصیلی فیصلہ جاری

Nawaz Sharif

اسلام آباد : نوازشریف کے 3ریفرنسز سے متعلق اسلام آباد ہائیکورٹ کے تفصیلی فیصلہ میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف کی درخواستیں میرٹ پرنہیں، نوازشریف کویہ حق نہیں وہ فردجرم کوچیلنج کریں، نوازشریف کی درخواستیں یکجانہیں ہوسکتیں۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم نوازشریف کے 3ریفرنسزسے متعلق اسلام آباد ہائیکورٹ کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا گیا ، جسٹس عامرفاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر

مشتمل بینچ نے فیصلہ جاری کیا، تفصیلی فیصلہ تفصیلی فیصلہ 21صفحات پرمشتمل ہے۔

اے آروائی نیوز نے ہائیکورٹ کے فیصلے کی کاپی حاصل کرلی ہے۔

نوازشریف کے 3ریفرنسزسے متعلق ہائیکورٹ کے تفصیلی فیصلہ میں کہا گیا تھا کہ نوازشریف کی درخواستیں میرٹ پرنہیں، میرٹ پرنہ ہونے پر درخواستیں مسترد کی جاتی ہیں، نوازشریف کو یہ حق نہیں وہ فردجرم کوچیلنج کریں۔


مزید پڑھیں :  نوازشریف کی نیب ریفرنسزکویکجا کرنےکی درخواستیں مسترد


تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف کی درخواستیں یکجا نہیں ہوسکتیں، 3مختلف ریفرنسزکی کارروائی آئین کے مطابق جاری ہیں۔

فیصلہ کے مطابق احتساب عدالت کے فاضل جج نیب ریفرنسزکی سماعت کررہاہے، نیب،ہائیکورٹ کےاختیارات اسفندیارولی کیس میں واضح ہیں۔

یاد رہے 2 روز قبل اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق نا اہل وزیراعظم نوازشریف کی نیب ریفرنسز کو یکجا کرنے کی درخواستیں مسترد کردیں تھیں اور اوپن کورٹ میں فیصلہ پڑھ کرسنایا گیا تھا۔

خیال رہے کہ احتساب عدالت نے نواز شریف کی تینوں ریفرنسز یکجا کرنے کی درخواست مسترد کردی تھی اور نواز شریف پر تینوں ریفرنس میں باضابطہ فرد جرم عائد کردی گئی تھی۔


مزید پڑھیں :  نواز شریف پر تینوں ریفرنس میں باضابطہ فرد جرم عائد


واضح رہے کہ کہ لندن فلیٹس سے متعلق ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف ان کے دونوں بیٹے حسن اور حسین نواز، مریم نواز اور داماد کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کوملزم نامزد کیا گیا دیگر دو ریفرنسز العزیزیہ اسٹیل ملزجدہ اور آف شور کمپنیوں سے متعلق فلیگ شپ انوسٹمنٹ ریفرنسز میں نوازشریف سمیت ان کے دونوں صاحبزادوں کو ملزم نامزد کیا گیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top