The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کے خلاف اندراج مقدمہ کی درخواست پرفیصلہ محفوظ

اسلام آباد : سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف اندارج مقدمہ سے متعلق درخواست کی سماعت کے دوران دلائل سننے کے بعد عدالت نے فیصلہ محفوظ کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں جسٹس عامرفاروق نے سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کے خلاف مقدمہ دائر کرنے کی درخواست پرسماعت کی۔

عدالت میں سماعت کے آغاز پربابراعوان نے کہا کہ نوا زشریف نے اپنے حلف سے غداری کی ہے، یہ آئین شکنی کا معاملہ بھی ہے۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف کے 12 مئی کے بیان کو بھارت نے پاکستان کے دہشت گردی میں ملوث ہونے کے اعتراف کے طور پر لیا۔

بابراعوان نے عدالت سے استدعا کی کہ ڈی جی ایف آئی اے کو نوازشریف کے خلاف کارروائی اور مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا جائے۔

درخواست گزار نے کہا کہ نواز شریف کی تقاریرنشرکرنے پرپابندی کا حکم دیا جائے، بانی ایم کیوایم کیس میں عدالت ایسی پابندی لگا چکی ہے۔

جسٹس عامرفاروق نے ریمارکس دیے کہ پیمرا کے قانون کاجائزہ لےکر حکم جاری کروں گا۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز پاکستان تحریک انصاف نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں نوازشریف کے متنازعہ بیان پردرخواست دائر کی تھی جس میں ان کے خلاف کارروائی کی استدعا کی گئی تھی۔

ممبئی حملوں میں کالعدم تنظیمیں ملوث ہیں‘نوازشریف

یاد رہے حال ہی میں سابق وزیر اعظم نواز شریف مقامی اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ ممبئی حملوں میں پاکستان میں متحرک عسکریت پسند تنظیمیں ملوث تھیں۔

نوازشریف کا کہنا تھا کہ یہ لوگ ممبئی میں ہونے والی ہلاکتوں کے ذمہ دار ہیں، مجھے سمجھائیں کہ کیا ہمیں انہیں اس بات کی اجازت دینی چاہیے کہ سرحد پار جا کر ممبئی میں 150 لوگوں کو قتل کردیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں