site
stats
پاکستان

سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کا معاملہ، اسلام آباد ہائی کورٹ نے وفاقی وزیر داخلہ کو کل طلب کرلیا

اسلام آباد : سوشل میڈیا پر مقدس شخصیات کی شان میں گستاخانہ مواد کے معاملے پر اسلام آباد ہائی کورٹ نے وفاقی وزیر داخلہ کو کل طلب کرلیا ہے، جسٹس شوکت صدیقی نے کہا ہے کہ سوشل میڈیا کو بند کرنے کا حکم دینا پڑا تو دیا جاسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں جسٹس شوکت صدیقی کی سربراہی میں سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کے خلاف دائر درخواست پر سماعت ہوئی ، سماعت میں اسلام آباد ہائی کورٹ نے وفاقی وزیر داخلہ کو کل طلب کرلیا۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس میں کہا اس معاملے سے اہم کچھ اور نہیں ہو سکتا، سوشل میڈیا کو بند کرنے کا حکم دینا پڑا تو دے سکتے ہیں ، آئی جی پولیس نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گزار میرے پاس نہیں آیا۔

دوران سماعت عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ یہ معاملہ بیوروکریسی پر نہیں چھوڑا جاسکتا، وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار ذاتی حیثیت میں پیش ہوکر بتائیں کہ اس اہم معاملے پر کیا اقدامات اٹھائے گئے۔

جسٹس شوکت نے استفسار کیا کہ چیئرمین پی ٹی اے آپ نے کیا ڈیوٹی کی ہے، اس جیسے واقعات سے ممتاز پیدا ہوتے ہیں، تمام علما یکجا ہو جائیں اور اپنی دکان بند کر دیں ،توہین رسالت والے معاملے پر ایک ہو جائیں

عدالت نے سیکریٹری داخلہ واطلاعات اورڈائریکٹر جنرل ایف آئی اے کو بھی عدالت میں پیش ہونے کا حکم جاری کیا۔

دوسری جانب اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے حکم تحریر کردیا ہے، جو تین صفحات پر مشتمل ہے، حکم نامے کے تحت وفاقی وزیر داخلہ ذاتی طور پر کل 9 بجے پیش ہوں ، عدالتی حکم پروفاقی وزیرداخلہ کو پیش ہونے کا پیغام وزارت داخلہ کوبھیج دیا گیا ہے ، کیس کی مزید سماعت کل کی جائے گی۔ عدالتی حکم میں کہا گیا ہے کہ یہ انتہائی اور سنجیدہ مسئلہ ہے، شیطان نما قوتوں کو ہر حال میں روک لیں گے ، اس مسئلے کو اگر عدالت نہ روکے تو ملک میں انارکی کا بازار گرم ہوگا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top