The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد، مرغزار چڑیا گھر کے تمام جانوروں کو 6 روز میں محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کا حکم

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ نے مرغزار چڑیا گھر میں رکھے گئے تمام جانوروں کو 60 روز کے اندر محفوظ مقامات پر منتقل کرنے کا تحریری حکم جاری کردیا۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے مرغزار چڑیا گھر کی حالت زار سے متعلق 67 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ جاری کیا جسے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے تحریر کیا۔

عدالت کا مرغزار چڑیا گھر کے کاون ہاتھی سمیت تمام جانوروں کو پناہ گاہوں یا محفوظ مقام پر منتقل کرنے کا حکم دیا، عدالتی حکم کے بعد کاون ہاتھی کو بالآخر 36سال بعد آزادی نصیب ہوئی۔

تحریری فیصلے میں لکھا گیا ہے کہ حدیث پاک ﷺ میں جانوروں سے اچھے سلوک کا حکم دیا گیا ہے،کاون ہاتھی سمیت چڑیا گھر کے جانوروں کو زندگیوں کو محفوظ بنایا جائے کیونکہ مرغزار چڑیا گھر کی حالت انتہائی تشویشناک اور خطرناک ہے۔

مزید پڑھیں: انتظامیہ چڑیا گھر کا خیال نہیں رکھ سکتی تو جانور آزاد کردے، اطہر من اللہ

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ کووڈ 19 کی بدولت انسان بے بس ہو گئے ہیں، مرغزار چڑیا گھر کی حالت زار کو دیکھتے ہوئے اسے وزارت موسمیاتی تبدیلی کو کنٹرول دیا گیا اور کارکردگی کو بہتر بنانے کا موقع فراہم کیا گیا مگر کوئی فائدہ نہ ہوا۔

عدالتی فیصلے میں لکھا گیا ہے کہ حکومت چیئرمین وائلڈ لائف مینجمنٹ کی سربراہی میں بورڈ تشکیل دے، یہ بورڈ چڑیا گھر کے انتظامات کو سنبھالے اور  6 روز کے اندر  تمام جانوروں کو پناہ گاہوں میں منتقل کرنے کے انتظامات مکمل کرے، جب تک عالمی سطح کی کوئی ایجنسی انسپکشن نا کرلے بورڈ مرغزار میں کوئی نیا جانور نہیں رکھے۔

عدالت نے تحریری فیصلے جاری کرتے ہوئے کیس کی سماعت 21 جون تک ملتوی کردی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں