The news is by your side.

Advertisement

جان لیوا مرض میں مبتلا 10 سالہ نور فاطمہ مسیحا کی منتظر

کراچی : جگر کے مرض میں مبتلا 10 سالہ نور فاطمہ کے والدین منتظر ہیں کہ کوئی مسیحا ان کی ننھی کلی کا علاج کروا دے۔

تفصیلات کے مطابق شہر قائد کے علاقے نیو کراچی کی رہائشی 10 سالہ نور فاطمہ ایسی عمر میں جب اسے تعلیم کے حصول کے لیے کوشاں ہونا چاہیے تھا قسمت نے اسے ایسے مرض میں مبتلا کردیا جس کے باعث معصوم بچی زندگی و موت سے جوجھ رہی ہے۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق نیو کراچی میں مقیم نور فاطمہ 10 برس کی عمر میں جگر کے جان لیوا مرض کا شکار ہے، متاثرہ بچی کو گذشتہ چار برس سے جگر کا عارضہ لاحق ہے۔

درد سے ٹرپتی ہوئی نور فاطمہ کے والدین زندگی بھر کی جمع پونجی اپنی زندگی بھر کی کمائی کو بچانے کی خاطر خرچ کر چکے ہیں اور اب کسی مسیحا کے منتظر ہیں۔

بے یار مددگار معصوم نور فاطمہ کا والد محنت و مزدوری کر کے اپنے گھر کی کفالت کرنے کے ساتھ ساتھ معصوم بیٹی کا علاج بھی کروا رہا تھا تاہم حالات نے والد کو نور فاطمہ کے علاج اور اہل خانہ کی کفالت سے بھی قاصر کردیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق رب کے حضور اپنی بیٹی کی زندگی کے لیے دعا مانگنے والی ماں کی ممتا اس وقت ٹرپ جاتی ہے  جب اس کی 10 سالہ لاڈلی بیٹی کی چیخیں درد کی شدت سے بلند ہوتی ہیں، نور فاطمہ کی والدہ منتظر ہے کہ کوئی مسیحا آئے جو اس کی ننھی کلی کا علاج کرا دے۔

بے یار و مددگار معصوم بچی کا علاج کرنے والے ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ نور فاطمہ کے علاج بیرون ملک میں ممکن ہے جس کے لیے لاکھوں روپے خرچہ آئے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں