The news is by your side.

Advertisement

میئرصاحب کی آفر قبول کرلی، خلوص سے مسئلہ حل کروں گا، مصطفیٰ کمال

کراچی: پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال کا کہنا ہے کہ صفائی کے معاملے میں جس جس کی ذمہ داری ہے اسے میری بات ماننی پڑے گی، ڈسٹرکٹ سینٹرل میں کچرے کے پہاڑ موجود ہیں۔

مصطفیٰ کمال کا اصغر علی شاہ اسٹیڈیم میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میئرصاحب کی آٖفر قبول کرلی، خلوص سے مسئلہ حل کروں گا، میں ٹھنڈے کمرے میں بیٹھ کر فیصلے کرنے والا آدمی نہیں ہوں، مسائل روڈ پر ہیں، ٹھنڈے کمرے میں بیٹھ کر کیا کام ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ جب سے میں نے پیشکش قبول کی ہے ہزاروں لوگ جڑگئے ہیں، لوگ مجھ سے پوچھ رہے ہیں آپ بتائیں ہمیں کیا کرنا ہے، میں نے لوگوں کو منع کردیاہے کہ یہ کام سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کا ہے، میئرکراچی میرا باس ہے، میں میئر کے نیچے کے لوگوں کا باس ہوں، فنڈنگ یاچندہ نہیں مانگ رہا، دستیاب وسائل میرے اختیار میں آنے چاہئیں۔

مصطفیٰ کمال نے تین ماہ میں‌ کراچی صاف کرنے کا چیلنج قبول کرلیا

مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ کراچی کے لوگ اسی وقت سوتے تھے جب میں ان کے لئے رات بھر جاگتا تھا، میئرصاحب اب آپ کو راتیں میرے ساتھ جاگنا پڑیں گی، میئرصاحب 3 ماہ کیلئے میرے باس ہیں، ان کی عزت کی جائے، 3ماہ کیلئے ایمرجنسی ہے، شہر کا برا حال ہے، سب کو دن رات کام کرنا ہے۔

سابق سٹی میئر نے کہا کہ جب کوئی اپنی رات قربان کرتا ہے تب ہی کراچی کے لوگ سو سکتے ہیں، کراچی والو، مجھے اب بھوک، پیاس اور نیند نہیں آئے گی، میئرصاحب اپنے افسران کو ہر حال میں میرے ماتحت کرنا ہے، افسران کہہ رہے ہیں ہمیں میئر نے منع کردیا ہے۔

میئر کراچی نے مصطفیٰ کمال کو پروجیکٹ ڈائریکٹر گاربیج تعینات کردیا

ان کا مزید کہنا تھا کہ موجودہ وسائل اور پیسہ دے دیں کراچی صاف ہو جائے گا، اربوں روپے ماہانہ ملازمین کو تنخواہوں کی مدمیں جارہے ہیں، اگر ملازمین ہی سڑکوں پر آجائیں تو کافی بہتری آسکتی ہے، کراچی کے 6 میں سے 4اضلاع میں ایم کیوایم کی حکومت ہے، ایسٹ اور ساؤتھ کے معاملات میئر نےخود صوبائی حکومت کو دیے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں