The news is by your side.

Advertisement

چمگاڈر قاتل بن گئی، امریکی خوف کا شکار

امریکی ریاست الینوائے میں چمگاڈر کے کاٹنے سے ایک شخص کی موت واقع ہوگئی ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق الینوائے ڈیپارٹمنٹ آف پبلک ہیلتھ (آئی ڈی پی ایچ) نے چمگاڈر کے کاٹنے سے ایک شخص کی موت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ انیس سو چون کے بعد ریاست میں ‘ ریبیز ‘ سے انسان کی ہلاکت کا یہ پہلا واقعہ ہے۔

آئی ڈی پی ایچ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ چمگاڈر کے کاٹنے کا واقعہ گذشتہ ماہ جھیل کاؤنٹی میں پیش آیا تھا جب اسی سالہ شخص نیند سے بیدار ہوا تو چمگاڈر اس کے گلے سے چمٹا ہوا تھا۔

رپورٹ کے مطابق ماہ ستمبر کے آغاز تک اس میں ‘ ریبیز ‘ کے کاٹنے کی کوئی علامات ظاہر نہ ہوئی تھی، ضروری ٹیسٹوں کے بعد متاثرہ شخص نے ریبیز سے وابستہ علامات کا سامنا کرنا شروع کیا جن میں گردن میں درد ، سر درد ، اعضاء پر قابو پانے میں دشواری ، آنکھوں میں دھندلاہٹ اور الفاظ کی ٹھیک طرح سے عدم ادائیگی شامل تھی۔

الینوائے ڈیپارٹمنٹ آف پبلک ہیلتھ (آئی ڈی پی ایچ) کے مطابق اگرچہ ریبیز کے علاج کے لئے ویکسین موجود ہے جو موت کو روک سکتی ہے، مگر متاثرہ شخص کو فوری طور پر علاج کرانا ہوتا ہے، ایک بار جب کوئی علامات ظاہر ہونا شروع ہوجائے تو،عام طور پر انہیں بچانے میں بہت دیر ہوجاتی ہے۔

واضح رہے کہ ‘ ریبیز’ کے باعث شرح اموات سب سے زیادہ ہے، کیونکہ علامات ظاہر ہونے کے بعد ہفتوں میں مریض ہلاک ہوجاتے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کے مطابق چمگادڑ اس بیماری کو لے جانے کے لیے جانا جاتا ہے جبکہ ‘کتے’ انسانی ریبیز سے ہونے والی اموات کا بنیادی ذریعہ ہیں، جس کے زریعے ننانوے فیصد ‘ ریبیز’ کی منتقلی ہوتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں