The news is by your side.

Advertisement

مولانا عبدالعزیز نے عمران خان کے مؤقف کی حمایت کردی

اسلام آباد : خطیب لال مسجد مولانا عبدالعزیز نے عمران خان کے مؤقف کی حمایت کردی، انھوں نے کہا کہ عمران خان کے موقف کی حمایت کرتے ہیں لیکن مسائل کے حل کے لئے جو طریقہ اختیار کررہے ہیں وہ درست نہیں۔

شہداء فاؤنڈیشن آف پاکستان(لال مسجد)کی جانب سے پاکستان تحریک انصاف کے دھرنے کی حمایت کرنے کے عندیہ کے بعد بعض حلقوں کی جانب سے من گھڑت خبریں پھیلائی گئیں کہ لال مسجد نے تحریک انصاف کے دھرنے میں شرکت کا اعلان کردیا ہے،اس صورتحال میں خطیب لال مسجد مولانا عبدالعزیز نے لال مسجد و جامعہ حفصہ کی پوزیشن واضح کردی۔

گذشتہ روز لال مسجد کے خطیب مولانا عبدالعزیز نے اپنے ایک آڈیو بیان میں کہا ہے کہ’’ ترجمان شہداء فاؤنڈیشن حافظ احتشام احمد کی جانب سے پی ٹی آئی کے دھرنے کے متعلق جس رائے کا اظہار کیا گیا ہم اس کا احترام کرتے ہیں تاہم لال مسجد و جامعہ حفصہ کی یہ رائے ہے کہ ملک میں قرآن و سنت کا نفاذ مسائل کا حل ہے نہ کہ چہروں کی تبدیلی، فقط چہروں کی تبدیلی سے مسائل حل نہیں ہوں گے کیونکہ ایسی صورت میں نظام اور قانون یہی رہے گا۔

انھوں نے کہا کہ میں عمران خان صاحب کے موقف کی سو فیصد حمایت کرتا ہوں کہ ملک میں کرپشن، چوری، ڈاکے اور ظلم و ستم انتہا کو ہیں لیکن عمران خان صاحب جو طریقہ اختیار کررہے ہیں کہ موجودہ حکومت چلی جائے اور وہ آجائیں، اس سے مسائل حل نہیں ہوں گے،ہم سمجھتے ہیں کہ جب تک قرآن و سنت کا نفاذ نہ ہو جائے اس وقت تک مسائل حل نہیں ہوں گے کیونکہ موجودہ نظام اور قانون انگریز کا بنایا ہوا ہے،اس نظام میں اربوں روپے کی کرپشن کی جاتی ہے،معاملہ عدالت چلا جائے توپھر کروڑوں روپے وکیلوں کو دیئے جاتے ہیں، یہاں تک کہ ججوں کو بھی پیسے دیئے جاتے ہیں اور پھر وہ لوگ صاف شفاف ہوکر باہر آجاتے ہیں۔

مولانا عبدالعزیز کا کہنا تھا کہ ہماری جدوجہد قرآن و سنت کے نفاذ کے لئے ہے، جب تک نظام یہ رہے گا، عدالتوں میں انگریز کا قانون ہوگا، اس وقت تک مسائل حل نہیں ہوں گے، قوم کو قرآن و سنت کے نفاذ، اس کی بالادستی اور اس پر عملدرآمد کے لئے اٹھنا چاہیئے، ہم عمران خان صاحب کی رائے کا احترام کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ سب کچھ ویسا ہی ہے جیسے وہ کہہ رہے ہیں لیکن اس کا حل وہ نہیں جو عمران خان صاحب کہہ رہے ہیں، مانتے ہیں کہ بیماری وہ ہی ہے جو عمران خان صاحب بتا رہے ہیں مگر اس کا علاج قرآن و سنت کا نفاذ ہے، اسی سے ملک کے حالات بہتر ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں