The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کی معاشی ترقی میں سب بڑی رکاوٹ کرپشن ہے،کرسٹیا لاگارڈ

اسلام آباد : آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈرائکٹر کرسٹیا لاگارڈ نے کہا ہے کہ پاکستان کی معاشی ترقی میں سب بڑی رکاوٹ کرپشن ہے۔

اسلام آباد میں ایمرجنگ مارکیٹس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آئی ایم ایف کی سربراہ نے کہا کہ کرپشن کی 168 ممالک کی فہرست میں پاکستان کا 117 واں نمبر ہے، کرپشن کی وجہ سے پاکستان کا بین الاقوامی سطح پر تشخص اچھا نہیں اسلیے یہاں غیر ملکی سرمایہ کاری بھی نہیں آرہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ابھرتی ہوئی معیشتوں میں سرمایہ کاری کی شرح 18 فیصد ہے جبکہ پاکستان میں یہ شرح 10 فیصد ہے، پاکستان کی برآمدات ابھرتی ہوئی مارکیٹس کے مقابلے میں چار گنا کم ہیں۔

آئی ایم ایف کی سربراہ نے کہا پاکستان کی معیشت میں قرضوں کا تناسب 65 فیصد ہے اور اس وجہ سے آمدنی کا سب سے بڑا حصہ قرضوں کی ادائیگی پر چلا جاتا ہے، حکومت اپنی صلاحیت سے 50 فیصد کم ٹیکس جمع کر پارہی ہے۔

انکا کہنا تھا کہ پاکستان کی معاشی صورتحال بہتر ہوئی ہے تاہم چیلنجر برقرار ہیں، پاکستان کیلئے اصلاحات کا جاری رکھنا بہت ضروری ہے، ادارہ جاتی اور توانائی کے شعبے میں اصلاحات کی جانی چاہئیں۔


مزید پڑھیں : پاکستان کی معاشی حالت پہلے سے بہتر ہے،آئی ایم ایف چیف، وزیراعظم سے ملاقات


یاد رہے کہ گذشتہ روز آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈرائکٹر کرسٹیا لاگارڈ پاکستان پہنچی تھیں اور وزیر اعظم نواز شریف سے ملاقات کی، ملاقات میں آئی ایم ایف چیف کا کہنا تھا کہ معاشی لحاظ سے پاکستان کی پوزیشن پہلے سے بہتر ہے، آئی ایم ایف پروگرام کا مکمل ہونا پاکستان کے امیج کے لیے بہتر ہے۔

کرسٹین لاگارڈ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں معاشی شرح نمو میں بتدریج اضافہ ہوا، مالی خسارہ کم ہوا اور افراط زر میں بھی مسلسل کمی ہورہی ہے۔

خیال ریے کہ کرسٹین لاگارڈ دس سال میں پاکستان کا دورہ کرنے والی پہلی آئی ایم ایف چیف ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان نے تاریخ میں پہلی بار آئی ایم ایف پروگرام مکمل کیا ہے، آئی ایم ایف نے پاکستان کو پروگرام کے تحت چھ اعشاریہ ایک ارب ڈالر قرضہ دیاتھا جس کی آخری قسط ستمبر میں دی گئی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں