The news is by your side.

Advertisement

آئندہ سال سے پاکستان میں مہنگائی بڑھ جانے کا امکان ہے، آئی ایم ایف

نیویارک : عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف نے خبردار کر دیا، آئندہ سال سے پاکستان میں مہنگائی بڑھ جانے کا امکان ہے۔

آئی ایم ایف کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ رواں مالی سال کے اختتام تک ملک میں افراط زر کی شرح پانچ فیصد سے زائد ہوجائے گی جو کہ گزشتہ سال سے تقریبا دوگنی ہے۔

آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ آئندہ سال میں گیس اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ستائیس فیصد تک کا اضافہ متوقع ہے، جس کے باعث ملک میں مہنگائی میں اضافہ ہوگا۔

عالمی مالیاتی ادارے کا کہنا ہے کہ پاکستان میں جون دوہزار سترہ کے بعد سے مہنگی پیٹرولیم مصنوعات کے اثرات نمایاں ہونگے۔

دوسری جانب عالمی بینک نے اپنی حالیہ رپورٹ میں بتایا ہے کہ آئندہ برس عالمی سطح پر پٹرولیم کی قیمتیں 27.5 فیصد، اجناس کی 3 فیصد، کھادوں کی 2فیصد اور دھاتوں اور معدنیات کی 4.1 فیصد تک بڑھ جائیں گی۔


مزید پڑھیں : آئی ایم ایف، پاکستان کو فنڈ زکی آخری قسط بھی جاری


جس کے باعث پاکستان میں اگلے سال چینی کی قیمت میں5.8 فیصد، چاول کی قیمت میں2.9 اور گندم کی قیمت میں0.7 فیصد کا معمولی اضافہ ہو گا لیکن کپاس کی قیمت 26 فیصد تک بڑھ جائے گی۔

یاد رہے کہ گذشتہ ماہ آئی ایم ایف نے پاکستان کو فنڈز کی آخری قسط بھی جاری کردی تھی، آئی ایم ایف کا کہنا تھا کہ پاکستان نے آئی ایم ایف پروگرام کے تحت کافی معاشی اصلاحات کی ہیں تاہم ان اصلاحات پر عملدرآمد ابھی نامکمل ہے جس کے بعد تین سالہ پروگرام کے لئے 6.4 ارب ڈالر کے تین سالہ پروگرام کی آخری قسط دس کروڑ اکیس لاکھ ڈالر کی منظوری دے دی ہے۔

واضح رہے قرضے کی یہ اقساط عالمی مالیاتی فنڈ کے حکام کی سخت نگرانی کے بعد ادا کی گئی ہیں تا ہم اب آخری قسط کے جاری ہونے کے بعد پاکستان کو اس پروگرام کے تحت لیے گئے قرضے کی 2020 سے ادائیگی کرنا شروع کرنا ہوگا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں