The news is by your side.

Advertisement

سفر کے خواہش مند غیرملکیوں کیلئے سعودی محکمہ پاسپورٹ کی اہم وضاحت

ریاض: سعودی محکمہ پاسپورٹ وامیگریشن نے ایسے غیرملکیوں کے لیے اہم وضاحت پیش کی ہے جو خروج وعودہ کے ذریعے سفر پر جانا چاہتے ہیں۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق مملکت میں مقیم کسی غیرملکی ملازم نے جوازات سے استفسار کیا تھا کہ وہ خروج وعودہ پر اپنے وطن جانا چاہتا ہے لیکن پاسپورٹ کی مدت ختم ہونے میں دو ماہ باقی ہے، اس ضمن میں کیا کیا جائے؟

جوازات نے وضاحت پیش کی کہ ایگزٹ ری انٹری کے لیے پاسپورٹ کی کم از کم مدت 60 دن ہونی چاہیے لیکن اگر کوئی ملازم خروج عودہ پر جارہا ہے تو پاسپورٹ کی معیاد 90 دن ہونا ضروری ہے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب میں اگر کوئی سفر سے قبل پاسپورٹ کی تجدید کرانا چاہے تو 25 دن لگیں گے لیکن ہنگامی بنیادوں پر سفارت خانے سے جلد تجدید ہوسکتی ہے، بعد ازں معلومات کو سسٹم میں فیڈ کرانا ہوگا۔

سعودی عرب: اہل خانہ کو ‘خروج وعودہ’ پر بھیجنے والا غیرملکی بڑی مشکل میں پھنس گیا

قبل ازیں ایک غیرملکی نے جوازات سے استفسار کیا تھا کہ میرے اہل خانہ خروج وعودہ پر مملکت سے باہر گئے ہوئے ہیں اور اب میں اپنا خروج ونہائی(فائنل ایگزٹ) نکلوانا چاہتا ہوں، ایسی صورت میں میری فیملی کا ویزا اسٹیٹس کیا رہے گا؟ کیا ان کا خودکار طریقے سے فائنل ایگزٹ لگ سکتا ہے؟۔

سعودی محکمہ پاسپورٹ نے مذکورہ شخص کی پریشانی دور کردی اور کہا سعودی قوانین کے تحت جب سربراہ خانہ کا خروج نہائی لگتا ہے تو سسٹم میں زیر کفالت کا بھی خروج نہائی لگ جاتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں