The news is by your side.

Advertisement

گھریلو ملازمین کے حوالے سے سعودی حکومت کی اہم ہدایات

ریاض: سعودی حکومت نے گھریلو ملازمین کے حقوق سے متعلق اہم ہدایات جاری کر دیں۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب میں انسداد انسانی اسمگلنگ کمیٹی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر بیان جاری کیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ آجروں پر گھریلو ملازمین کے سات حقوق مقرر ہیں۔

1-گھریلو عملے سے صرف وہی کام لیا جاسکتا ہے جس پر آجر اور اجیر پہلے سے متفق ہوں، انتہائی مجبوری میں عملے سے کوئی ایسا کام لیا جاسکتا ہے جو اس کے کام سے بہت زیادہ مختلف نہ ہو۔

2-گھریلو ملازمین سے ایسا کوئی کام نہیں لیا جاسکتا ہے جس سے اس کی صحت وسلامتی کو خطرہ ہو یا وہ کام انسانی وقار کے منافی ہو۔

3-آجر گھریلو عملے کو ہر ہجری مہینے کے آخر میں متفقہ محنتانہ ادا کرے،الا یہ کہ فریقین تحریری طور پر اس حوالے سے کوئی اور معاملہ طے کرچکے ہوں۔

4-آجر گھریلو عملے کا محنتانہ کیش یا چیک کی صورت میں دے گا، اگر گھریلو ملازم کسی خاص بینک کے اکاؤنٹ میں محنتانہ وصول نہ کرنا چاہتا ہو تو ایسی صورت میں جب بھی محنتانے کا لین دین ہوگا تو اسے تحریر میں لایا جائےگا۔

5-انسداد انسانی اسمگلنگ کمیٹی کی جانب سے جاری ہدایات کے مطابق آجر گھریلو عملے کو مناسب رہائش فراہم کرنے کا پابند ہے۔

6-گھریلو کارکن کا حق ہے کہ روزانہ کم از کم 9 گھنٹے آرام کے لیے دیے جائیں۔

7-آجر کی ذمہ داری ہے کہ وہ گھریلو کارکنان کو اپنے کاروبار کی اجازت نہ دے۔

انسداد انسانی اسمگلنگ کمیٹی نے انتباہ کیا کہ اگر آجر ان سات حقوق میں سے کوئی ایک حق ادا نہیں کرے گا تو اس کا احتساب کیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں