پاکستان کا نام گرے لسٹ سے نکالنے کے سلسلے میں اہم مذاکرات اور پیشرفت
The news is by your side.

Advertisement

پاکستان کا نام گرے لسٹ سے نکالنے کے سلسلے میں اہم مذاکرات اور پیشرفت

اسلام آباد: پاکستان کا نام گرے لسٹ سے نکالنے کے سلسلے میں اہم پیشرفت ہوئی، فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی ایشیا پیسیفک ٹیم کے پاکستانی حکام سے مذاکرات ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کی ایشیا پیسیفک ٹیم نے پاکستانی وزارت خزانہ، نیب، ایف بی آر، اسٹیٹ بینک، اور سیکیورٹی اداروں کے حکام سے ملاقاتیں کیں۔

پاکستانی حکام سے ہونے والے مذاکرات میں منی لانڈرنگ، دہشتگردوں کی مالی معاونت روکنے کےاقدامات کا جائزہ لیا گیا، ایس ای سی پی، نیب، اینٹی نارکوٹکس فورس کے اقدامات پر اطمینان کا اظہار کیا گیا۔

قبل ازیں فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے وفد نے 13 اگست کو ملکی دارالحکومت اسلام آباد کا دورہ کیا تھا اور اقدامات کے لیے کئی نکات بھی پیش کیے تھے اور نکات پر عمل نہ کرنے کی صورت میں پاکستان کو بلیک لسٹ کیے جانے کا بھی عندیہ دیا تھا۔


پاکستان کو کیا اقدامات کرنے ہیں، فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے نکات


بعد ازاں ذرائع نے دعویٰ کیا تھا کہ نکات میں جن پہلوؤں کو مدنظر رکھا گیا ہے وہ یہ ہیں کہ ‎منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لیے عملی اقدامات کیےجائیں، ‎کراس بارڈرکیش کی صورت میں کی جانیوالی منی لانڈرنگ کے خلاف اقدامات ہونے چاہیئیں۔

خیال رہے کہ فنانشل ایکشن ٹاکس فورس کے نکات میں یہ بھی کہا گیا تھا کہ یو این سیکیورٹی کونسل کی پابندی والی تمام جماعتوں کے خلاف ایکشن لیا جائے، جبکہ پاکستان نے ایف اے ٹی ایف کے نکات پر عمل نہ کیا تو اسے بلیک لسٹ کیا جاسکتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں