The news is by your side.

Advertisement

خاتون سے زیادتی کے واقعے کے بعد گجرپورہ سے متعلق اہم انکشاف

لاہور: خاتون سے زیادتی کے واقعے کے بعد گجرپورہ سے متعلق اہم انکشاف سامنے آیا ہے، یہ کوئی پہلا اور دوسرا واقعہ نہیں بلکہ گجر پورہ کا علاقہ جرائم پیشہ افراد کی آماج گاہ بن چکا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق خاتون سے زیادتی کے واقعے کے بعد لاہور کے مضافاتی علاقے گجرپورہ سے متعلق معلوم ہوا ہے کہ یہ جرائم پیشہ افراد کی آماج گاہ بن چکا ہے، یہاں نہ صرف مختلف جرائم تواتر کے ساتھ ہو رہے ہیں بلکہ پولیس کے ٹارچر سیل بھی پکڑے گئے ہیں۔

ٹارچر سیل کیس میں سی سی پی او لاہور نے ایس ایچ او رضا جعفری کو گرفتار بھی کرایا ہے، یہاں منشیات فروشی اور ڈکیتی کی سیکڑوں ایف آئی آرز درج ہیں۔

ایس ایچ او گجر پورہ شاہزیب 15 سال سے ترقی نہیں پا سکے ہیں، شاہزیب کو کئی مرتبہ شوکاز نوٹس بھی مل چکے ہیں۔

خاتون زیادتی کیس :ملزم شفقت کا 6روزہ جسمانی ریمانڈ منظور ، مقدمے میں دہشت گردی کی دفعات شامل

ریپسٹ گینگ کو ماضی میں پولیس اور با اثر شخصیات کی سرپرستی حاصل ہونے کا بھی انکشاف ہوا ہے، ماضی میں گینگ کی متاثرہ خاندانوں سے صلح بھی با اثر افراد کراتے رہے ہیں۔

واضح رہے کہ لاہور لنک روڈ زیادتی کیس میں مزید پیش رفت ہوئی ہے، مرکزی ملزم عابد کے ایک اور ساتھی بالا مستری کو چیچہ وطنی سے گرفتار کر لیا گیا ہے، پولیس کا کہنا ہے کہ بالا مستری مرکزی ملزم عابد کے ساتھ مختلف جرائم میں شریک رہا ہے۔

پولیس کے مطابق ملزمان عابد علی اور شفقت علی بالا مستری کے پاس کام کرتے تھے، بالا مستری سے عابد علی کے ٹھکانوں سے متعلق تفتیش کی جا رہی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں