The news is by your side.

Advertisement

امتحانات کے حوالے سے وزیرتعلیم کا اہم بیان

وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود نے تعلیمی اداروں کی بندش کے بعد امتحانات کے حوالے سے کہا ہے کہ اس مرتبہ بچوں کو بغیر امتحانات اگلی کلاس میں بٹھانےکا ارادہ نہیں اس بار ہماری کوشش ہےکہ امتحانات لیےجائیں،حالات بہتر ہو گئے تو انشااللہ امتحانات ہوپائیں گے۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام’ پاورپلے’ میں گفتگو کرتے ہوئے شفقت محمود نے کہا کہ خواہش تھی جس حد تک ہوسکےتعلیمی ادارےکھلےرہیں مگر کوروناوباکی دوسری لہرتیزی سےپھیل رہی ہےجس پرمشاورت کی، دسمبرمیں بھی صورتحال اتنی ہی خراب ہوگی جیسی جون میں تھی۔

شفقت محمود نے کہا کہ کوشش کی آن لائن کلاسزچلیں یاپھرہفتےمیں ایک دن ہوم ورک دیاجائے، آج اجلاس میں تمام ڈاکٹرز اورمحکمہ صحت حکام نےتجاویزدیں، 5کروڑبچےاسکول جاتے ہیں، کورونا کا شکار نہ بھی ہو تو کیریئر بن سکتے ہیں کوشش ہےایک چوتھائی حصےکوآئسولیٹ کیاجائے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ متبادل ذرائع سےمتعلق بھی تجاویزآئی ہیں جن پرغورجاری ہے اسکول کانیاسال اپریل بجائے اگست میں لےجانےکی تجویزہے، پوری کوشش کریں گےبچوں کاکورس ورک مکمل ہوسکے، امتحانات میں تاخیر کرنےکی تجویزپربھی غوروخوض کیاجائےگا، میٹرک کےامتحانات بھی تاخیرکرنےکی تجاویزآئیں۔

24دسمبرتک عملاًاسکول کھلےرہیں بچےنہ آئیں ٹیچرز آتے رہیں

انہوں نے واضح کیا کہ 24دسمبرتک عملاًاسکول کھلےرہیں بچےنہ آئیں ٹیچرز آتے رہیں، کوشش کررہےہیں آن لائن کلاسز ہوں تاکہ تعلیمی سال خراب نہ ہو، گرمیوں کی چھٹیاں کم کرنےپربھی غورکیاجارہاہے، پرائیویٹ اسکولوں سےمتعلق بھی مختلف تجاویزپرغورکیاجارہاہے، کم فیسوں والےاسکولزکیلئےقرض حسنہ سےمتعلق غورکیاجارہاہے، ٹیچرزکی کم تنخواہ سےمتعلق بھی کچھ تجاویزآئی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں