site
stats
پاکستان

بنی گالہ غیر قانونی تعمیرات: عمران خان کی رہائش گاہ بھی شامل

اسلام آباد: سی ڈی اے نے بنی گالہ میں غیر قانونی تعمیرات کے حوالے سے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی جس میں عمران خان کی رہائش گاہ کو بھی غیرقانونی قرار دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بنی گالہ میں غیر قانونی تعمیرات کے حوالے سپریم کورٹ میں مقدمہ زیرسماعت ہے، گزشتہ سماعت پر عدالت نے سی ڈٖی اے (کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی) کو بنی گالہ میں غیر قانونی پلاٹنگ کے حوالے سے رپورٹ جمع کروانے کے احکامات جاری کیے۔

ذرائع کے مطابق سی ڈی اے کی جانب سے سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کروادی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بنی گالہ میں 120 سے زائد مکانات کی تعمیرات غیر قانونی ہیں۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ بنی گالہ میں موجود تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی رہائی گاہ بھی غیر قانونی طور پر تعمیر کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کو بنی گالہ میں غیر قانونی تعمیرات کے حوالے سے خط تحریر کیا تھا جس کا نوٹس لیتے ہوئے جسٹس ثاقب نثار نے سی ڈی اے سے تفصیلی جواب طلب کیا تھا۔

عمران خان کی جانب سے تحریر کردہ خط میں کہا گیا تھا کہ بنی گالہ میں لینڈ مافیا سرگرم ہے اور وہ بنی گالہ میں غیر قانونی مکانات کی تعمیرات کررہی ہے جس کے خلاف سی ڈی اے سمیت کوئی بھی متعلقہ ادارہ کارروائی نہیں کررہا۔

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا تھا کہ لینڈ مافیا اور بلڈرز نے بنی گالہ کے خوبصورت علاقے کو جنگل سے کنکریٹ میں تبدیل کردیا، پارکس میں غیر قانونی تجاوزات قائم کی جارہی ہیں جس کے باعث ماحول اور راول جھیل کو شدید نقصان پہنچ رہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top