قانون واضح نہیں تو عمران خان کا سرٹیفکیٹ کیسے جھوٹا مانیں: چیف جسٹس -
The news is by your side.

Advertisement

قانون واضح نہیں تو عمران خان کا سرٹیفکیٹ کیسے جھوٹا مانیں: چیف جسٹس

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف عمران خان کی نااہلی کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس پاکستان کا کہنا ہے کہ قانون واضح نہیں تو عمران کا سرٹیفکیٹ کیسے جھوٹا مان لیں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں عمران خان نا اہلی کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس نے سوال کیا کہ کیا دہری شہریت کا حامل شخص کسی سیاسی جماعت کا ممبر بن سکتا ہے۔

وکیل اکرم شیخ نے کہا کہ دہری شہریت کے حوالے سے قانون واضح نہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ قانون واضح نہیں تو عمران خان کا سرٹیفکیٹ کیسے جھوٹا مان لیں۔

جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ قانون غیر ملکی فنڈنگ کے حوالے سے بالکل واضح ہے۔ غیر ملکی کمپنی کسی سیاسی جماعت کو فنڈ نہیں دے سکتی۔

تحریک انصاف کے وکیل انور منصور نے کہا کہ مسلم لیگ ن لندن میں بھی بطور کمپنی رجسٹر ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ معاملہ صرف نیازی سروسز کو ظاہر نہ کرنے کا ہے۔

عمران خان کے وکیل نعیم بخاری کا کہنا تھا کہ نیازی سروسز کا کل اثاثہ صرف 9 پاؤنڈ تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں