The news is by your side.

Advertisement

عدالتوں سے نااہل ہوا تو پارٹی چیئرمین بھی نہیں بنوں گا، عمران خان

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ نواز لیگ اور پیپلزپارٹی نے ساڑھے چار سال تک فکس میچ کھیلا، دونوں جماعتوں کے درمیان سی او ڈی مک مکا تھا، عدالتوں سے نااہل ہوا تو پارٹی چیئرمین بھی نہیں بنوں گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام سوال یہ ہے میں میزبان ماریہ میمن کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔

پوری اسٹیٹ مجرم نوازشریف کے ساتھ کھڑی ہے

عمران خان نے کہا کہ نواز لیگ اور پیپلزپارٹی نے مل کر ملک کا پیسہ لوٹ کر باہرمنتقل کیا ان دونوں پارٹیوں نے ایک دوسرے کےخلاف کبھی کچھ نہیں کہا اگر ہم سڑکوں پرنہ نکلتے تو دونوں جماعتوں کا مک مکا تھا، ملک میں حکومت نام کی کوئی چیزنہیں ہے، پوری اسٹیٹ مجرم نوازشریف کے ساتھ کھڑی ہے، شاہد خاقان نوازشریف کو اپنا وزیراعظم مانتے ہیں، اب عوام کو بھی حکومت پر کوئی اعتماد نہیں رہا، ملک میں غیریقینی کی صورتحال ہے۔

پانچ سال میں عوام میں شعورآگیاہے

عمران خان کا کہنا تھا کہ جمہوریت کابہترین طریقہ نئے انتخابات ہیں، پاکستان کے مسائل کاحل صرف الیکشن میں ہے، 2013میں تمام جماعتوں نے کہا کہ الیکشن میں دھاندلی ہوئی ہے لیکن پانچ سال میں عوام میں شعورآگیاہے، اب پہلے کی طرح چپ کرکےنہیں بیٹھیں گے۔ گزشتہ الیکشن میں ہم تیارنہیں تھے،اب ہم تیارہیں ۔

شہبازشریف کے پارٹی سنبھالنے سے ن لیگ عارضی بچ جائےگی،

عمران خان نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ شہبازشریف کے پارٹی سنبھال لینے سے ن لیگ عارضی طور پر بچ جائےگی، کینسر کا علاج تھوڑی دیر کیلئے ڈسپرین سے ہوسکتا ہے، سوچا گیا تھا کہ نوازشریف چلےگئے تو کوئی اور آجائےگا لیکن وہ بیٹھے رہے۔ اپنےخاندان کےسوا کسی اور کو آگے آنےکیوں نہیں دیا گیا، شہباز،نواز نے کیوں کسی اورکو پارٹی کا سربراہ بننےنہیں دیا۔

حدیبیہ کیس کھلا تو شہباز بھی نوازشریف کے مقام پرجائینگے

چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ شریف خاندان300ارب روپے کی منی لانڈرنگ میں پکڑا گیا ہے، نوازشریف اوران کے بچوں کا ٹرائل جاری ہے، حدیبیہ پیپرمل کیس کھلا تو شہبازشریف کا نام اس میں شامل ہے، حدیبیہ کیس سنا گیا توشہباز شریف بھی نوازشریف کے مقام پرپہنچ جائینگے، حیران ہوں حدیبیہ پیپرملزکیس میں اب تک پیشرف کیوں نہیں ہوئی۔

عمران خان نے کہا کہ پرویز مشرف اگر این آر او نہ دیتے تو شہبازشریف پہلے ہی پکڑے جا چکے ہوتے، وزیر اعلیٰ پنجاب کااحتساب ہوا ہی نہیں، نوازشریف تاحیات نااہل ہوچکے ہیں، ان کیخلاف مزید شواہد سامنے آرہے ہیں، ریاض پیرزادہ کو بھی پتہ ہے نوازشریف اب واپس نہیں آسکتے۔

چوہدری نثاراور مریم نوازکا کوئی مقابلہ نہیں

انہوں نے کہا کہ نوازشریف کے پاس منی ٹریل ہی نہیں تو بتائیں کہ یہ پیسہ کہاں سے کمایاتھا؟ پانچ ججز نےنااہل کیا تو شریف خاندان نے کہا کہ ہمیں اقامے پرنااہل کیا گیا، مریم نواز ن لیگ کا سارا نظام چلارہی ہیں، کیا ن لیگ میں شریف خاندان کے سوا کوئی لیڈرشپ کے قابل نہیں، چوہدری نثاراور مریم نوازکا کوئی مقابلہ نہیں، وزیراعظم شاہد خاقان عباسی ہیں،فیصلے مریم نواز کررہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایک نااہل وزیراعظم بھی اپنی بیٹی سے مشورے لے کر چلتے ہیں، مریم کے نام چار مے فیئرکے محلات ہیں، محلات لینے کے لئے پیسہ نوازشریف کا تھا، جب منی لانڈرنگ ہوئی تو نوازشریف اس وقت وزیراعظم تھے، ان کے پاس پیسہ کہاں سےآیا؟

میں یہ نہیں کہوں گا کہ مجھےکیوں نکالا؟

عمران خان کا کہنا تھا کہ میں نااہل ہوتا تو کبھی پارٹی کاصدر دوبارہ نہیں بنتا، اگرمیں نااہل ہوا تو پارٹی کا چیئرمین بھی نہیں رہوں گا، نااہل ہونے کے بعد میں یہ نہیں کہوں گا کہ مجھےکیوں نکالا؟ میرےنہ ہونےسے3سے4لوگ ہیں جوپی ٹی آئی کو سنبھال سکتے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ جنرل الیکشن کے بعد پارٹی الیکشن کرائیں گے، تحریک انصاف موٹو گینگ کو نہیں لے گی، مشرف کے گن گانے والے پی ٹی آئی میں نہیں آئیں گے، پی ٹی آئی میں بہت سے لوگ آنے والے ہیں، جس کا نیب میں کیس ہو اسے پارٹی میں نہیں لیا جاسکتا۔

نواز شریف بچ گئے تو پاکستان کی جوڈیشری کو دفنا دیں

عمران خان نے بتایا کہ مسلم لیگ نواز میں گروپس بن چکے ہیں، ایک گروپ نوازشریف کے لئےشور مچارہا ہے،
یہ لوگ امید لگائےبیٹھے ہیں کہ کسی طرح نوازشریف بچ جائیں، نواز شریف بچ گئے تو پھرپاکستان کی جوڈیشری کو آپ دفنا دیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ عدالت نے جو چیزیں مانگیں وہ فراہم کردی گئی ہیں، عدالت میں بنی گالہ زمین کی ٹریل اور لندن فلیٹ40سال پرانا ہے اس کی ٹریل بھی عدالت میں دے دی، نیازی سروسز جو مجھے پیسے فراہم کرتی تھی وہ میں نے ڈکلیئر کئے، عدالت کو بتایا گیا کہ ایک لاکھ پاؤنڈ نیازی سروسز میں رہ گیاتھا۔

ان کا کہنا تھا کہ مجھے اداروں کے سامنے پیش ہونا کوئی مسئلہ نہیں، میں الیکشن کمیشن پاکستان میں پیش بھی ہونے جارہاہوں، الیکشن کمیشن گورنمنٹ کا ادارہ ہے،سپریم کورٹ کاادارہ نہیں، اگر میں کہتا ہوں کہ الیکشن میں دھاندلی ہوئی ہے تو یہ میراجمہوری حق ہے، الیکشن کمیشن کہتا ہے آپ یہ نہیں کہہ سکتے تو آپ میرا منہ بند کر رہے ہیں، بائیس جماعتوں نے کہا دھاندلی ہوئی، دھاندلی کیخلاف پرامن احتجاج دہشت گردی کیسے ہوسکتا ہے؟

سرفراز احمد نے  بکیز کو ایکسپوز کرکے بہت اچھا کام کیا

عمران خان نے قومی ٹیم کے کپتان سرفرازاحمد کو سراہتے ہوئے کہا کہ سرفراز نے بورڈ کو آگاہ کرکے بہت اچھا کام کیا، انہوں نے بکیز کو ایکسپوز کردیا، اسپاٹ فکسنگ قوم سے غداری ہے، اس کو پکڑنا بہت مشکل کام ہے، اسپاٹ فکسنگ روکنےکیلئےبکیزکوپکڑناہوگا، سرفراز نے بورڈ کو آگاہ کیا اسے داد دیتا ہوں، ابتداء میں کڑا احتساب ہوتا تواسپاٹ فکسنگ اب تک ختم ہوجاتی، ہوس کا کوئی علاج نہیں ہے،اوپر سے کرپشن ہو توکھلاڑی کیسے متاثرنہیں ہوں گے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں