The news is by your side.

Advertisement

این اے 53: اپیلٹ ٹریبیونل نے عمران خان کو الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی

اسلام آباد : اپیلٹ کورٹ نے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان کو قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 53 سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔

تفصیلات کے مطابق جسٹس محسن اخترکیانی پرمشتمل اسلام آباد ہائی کورٹ کے اپیلٹ ٹربیونل نے سربراہ پاکستان تحریک انصاف عمران خان کو این اے 53 اسلام آباد ٹو سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔

الیکشن کمیشن نے درخواست گزار کی جانب سے چیئرمین پی ٹی آئی کے خلاف اٹھائے جانے والے تمام اعتراضات مسترد کردیے۔

جسٹس محسن اخترکیانی نے فریقین کے وکلا کے دلائل سننے کے بعد عمران خان کو الیکشن لڑنے کی اجازت دی۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان پربنی گالہ کی مالیت کم ظاہرکرنے کے الزامات تھے۔

خیال رہے این اے 53 اسلام آباد ٹو سے ریٹرننگ افسر نے عمران خان کے کاغذات نامزدگی عوام کی فلاح وبہبود سے متعلق حلف نامے کی شق این کو پُر نہ کرنے پرمسترد کردیے تھے جس کے خلاف آج اپیلٹ ٹربیونل میں سماعت ہوئی۔

عمران خان اسلام آباد میں ایپلٹ ٹربیونل میں اپنے وکیل بابراعوان کے ہمراہ پیش ہوئے جہاں انہوں نے اپنے کاغذات نامزدگی میں شق این کے خانے میں تحریر کو مکمل کیا۔

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ نے شق این میں لکھا کہ انہوں نے عوام کی فلاح وبہبود کے لیے کینسراسپتال، نمل یونیورسٹی بنائی اور عوام کو آئینی حقوق کی جدوجہد کا شعور دیا۔

یاد رہے کہ سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم پرانتخابات میں حصہ لینے والے امیدوار کو اپنے حلقے میں کیے جانے والے عوام کی فلاح وبہبود کے کاموں سے متعلق بتانا ضروری قرار دیا تھا۔

واضح رہے کہ ریٹرننگ افسران کی جانب سے بیشتر امیدواروں کے کاغذات نامزدگی شق این کو پُر نہ کرنے پر مسترد کیے گئے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں