The news is by your side.

Advertisement

لاک ڈاؤن سے کہیں زیادہ خطرہ بھوک اور افلاس کا ہے، عمران خان

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کاروبار کی بندش سے معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا،
لاک ڈاؤن سے کہیں زیادہ خطرہ بھوک اور افلاس کا ہے۔

ان خیالات کا اظہارانہوں نے کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال سے متعلق اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا، اسلام آباد میں وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت کورونا صورتحال پر اجلاس ہوا، وزرائے اعلیٰ پنجاب اور کے پی ویڈیو لنک کے ذریعےاجلاس میں شریک ہوئے۔

اجلاس کے شرکاء کو ظفرمرزا نے کورونا کے اعداد وشمار، مصدقہ کیسز اور جغرافیائی پھیلاؤ پربریفنگ دی، ٹیسٹنگ کی تعداد اور کیسزمیں اضافے سےتناسب سے متعلق بھی آگاہ کیا، اس کے علاوہ انہوں نے مستقبل کے اعدادوشمار اور اسپتالوں میں بستروں کی دستیابی پر بھی بریفنگ دی۔

اجلاس میں طبی آلات کی فراہمی اورپیشہ ور عملے کی موجودگی یقینی بنانے پر گفتگو کے علاوہ صحت کی سہولتوں اور اسپتالوں کی استعداد میں اضافے کا بھی جائزہ لیا گیا۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ بھوک،وبا سے متعلق حفاظتی اقدامات میں توازن برقرار رکھنا ہے، لاک ڈاؤن کے ساتھ ساتھ خطرہ اس سے کہیں زیادہ بڑھتی ہوئی بھوک اور افلاس کا ہے، لاک ڈاؤن کورونا کاعلاج نہیں بلکہ عارضی اقدام ہے۔

انہوں نے کہا کہ فیصلے  زمینی حقائق اور عوام کی حالت دیکھ کر کرنے ہیں، جب تک معیشت بحال نہیں ہوجاتی نادار طبقے کی مشکلات بڑھیں گی، کاروبار کی بندش سے معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا، لاک ڈاؤن میں نرمی کا اقدام نہایت مجبوری میں اٹھانا پڑا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ کورونا وائرس ایک حقیقت ہے جس سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدابیرانتہائی ضروری ہیں، وضع شدہ قواعدوضوابط پرعملداری کوہر صورت ممکن بناناہے، حفاظتی تدابیراختیارکرنےکیلئےعوام میں شعور اجاگر کیا جانا چاہیے انہوں نے ہدایت کی کہ پولیس عوام پر سختی کے بجائے دوستانہ رویہ اختیار کرے۔

وزیراعظم عمران خان نے عوامی آگاہی میں کلیدی کردار پر میڈیا کے کردار کو سراہتے ہوئے کہا کہ میڈیا عوام کو حفاظتی تدابیر اختیارکرنے کیلئےمزید مؤثر کردار ادا کرے، وزرائے اعلیٰ پنجاب اور کے پی نے ٹرانسپورٹ سے متعلق عام آدمی کے مسائل کا ذکر کیا، وزرائےاعلیٰ کا کہنا تھا کہ پبلک ٹرانسپورٹ کی بندش سے عام آدمی کا کاروبار اور نقل وحرکت متاثر ہوئی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں