site
stats
پاکستان

اداروں کوخریدنے کی روش نے جمہوریت کو خطرے میں ڈالا، عمران خان

لاہور : چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ جمہوریت کو خطرے میں اُن کرپٹ لوگوں نے ڈالا ہے جو سیاست میں رشوت اور جوڑ توڑ کے بانی ہیں۔

وہ لاہور پہنچنے کے بعد میڈیا سے بات کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ کل سے کچھ وزراء کہہ رہے ہیں کہ عمران خان جمہوریت کو خطرے میں لے آئے حالانکہ نوازشریف اپنی چوری چھپانے کے لیے جمہوریت کو نقصان پہنچا رہے ہیں اورتمام وزیرایک فیملی کی کرپشن چھپانےکی کوشش کررہے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ یہ لوگ پیسے کے بل سب کو خریدنے کی کوشش کرتے ہیں اور جب سے سیاست میں آئے ہیں ان کا طریقہ واردات یہی رہا ہے اور لوگوں کو خریدنے کی کوشش بھی کی جاتی رہی ہے یہ سلسلہ اب تک جاری ہے لیکن زیادہ عرصے چل نہیں سکے گا۔

انہوں نے کہا کہ یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے جنرل آصف نواز کو بی ایم ڈبلیو کی پیشکش کی جب کہ بے نظیر کی حکومت گرانے کے لیے اسامہ بن لادن سے پیسے لیے اور سجاد علی شاہ کو بریف کیس دینے کی کوشش کی گئی اور انکارپرسپریم کورٹ پرحملہ کروایا گیا۔

عمران خان ن نے کہا کہ اصغرخان کیس ابھی بھی عدالت میں ہے اور اب یہ لوگ آج ہمیں درس دے رہے ہیں کہ جمہوریت خطرے میں ہے ؟

انہوں نے کہا کہ 22 جماعتوں نے انتخابات میں کہا تھا کہ دھاندلی ہوئی ہے جس پر ہم نےتو صرف اپنا حق استعمال کیا اورعدالتوں کا رخ کیا اورسُر خرو ہوئے۔

عمران خان نے کہا کہ ہم تو صرف یہ کہتے ہیں کہ آپ نے مے فیئرکے بنگلے تسلیم کیے ہیں لیکن پارلیمنٹ میں آپ جھوٹ بولتے رہے ہیں اور اب سپریم کورٹ میں قطری خط آگیا ہے، جب اس تضاد بیانی کی تحقیقات کی جائے تو اعتراض اُٹھایا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میڈیا کے گاڈ فادر میرشکیل میاں صاحب سے پیسے لے کران کے جرم چھپانے کی کوشش کررہے ہیں ایک طرف پورا میڈیا ہے جو حقائق پیش کررہا ہے اوردوسری طرف میڈیا کا گاڈ فادر ہے جو حکمرانوں کی کرپشن چھپا رہا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ 2 نومبرکو ہم سڑکوں پربھی آسکتے تھے لیکن میں نےلوگوں کوروکا اس سے قبل ہمارے پرامن احتجاج کو روکا گیا حالانکہ جمہوری احتجاج سے کون سے ملک میں شہریوں کوروکا جاتا ہے چنانچہ ہم سپریم کورٹ اور گئے اور جمہوریت کومضبوط کرنے کے لیے میدان میں آئے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top