The news is by your side.

Advertisement

میاں صاحب قومیں موٹروے سے نہیں تعلیم سے بنتی ہیں، عمران خان

سوات : پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ میاں صاحب جہاں جاتے ہیں موٹر وے بنانے کی بات کرتے ہیں، میں میاں صاحب کو بتانا چاہتا ہوں کہ قومیں موٹر وے بنانے سے نہیں تعلیم سے بنتی ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوات میں پی ٹی آئی کے زیر اہتمام ایک بہت بڑے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا، عمران خان نے کہا کہ میں جلسے میں عوام کی اتنی بڑی تعداد میں آنے پرعوام کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔

آپ کی آمد وزیر اعظم نواز شریف کیلئے پیغام ہے،انہوں نے کہا کہ میں نے پہلا الیکشن سوات سے ہی جیتا تھا، سوات کے لوگوں نے جو عزت دی وہ کبھی نہیں بھول سکتا۔

انہوں نے کہا کہ میاں صاحب آپ کونیا خیبرپختونخواہ نظرنہیں آئےگا کیوں کہ نیا پاکستان اسکولوں میں بنے گا۔جہاں ڈھائی کروڑ بچے اسکول نہ جاتے ہوں وہاں ملک موٹر وے سے نہیں بنتا۔


Mian Sahib will be sent to jail if PTI makes… by arynews

عمران خان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کو ہیلی کاپٹر سے خیبر پختونخواہ میں تبدیلی نظر نہیں آرہی تو میں ان کو بتانا چاہتا ہوں کہ ہم نے خیبر پختونخواہ میں اداروں کو مضبوط کیا ہے۔

نیا پختونخواہ اسکولوں اور یونیورسٹیوں میں بنے گا ۔سب سے زیادہ پیسہ ہمارے صوبے میں تعلیم پر خرچ کیا گیا اور اس کے بعد ہسپتالوں میں پیسہ خرچ کیا گیا ۔

پولیس ہماری سب سے بہتر ہے اور کرپشن ہمارے صوبے میں سب سے کم ہے ،لیکن جب ہم نے حکومت سنبھالی تھی تو صوبے میں سب سے زیادہ کرپشن تھی ۔

خیبر پختون خواہ کو ماڈل صوبہ بنائیں گے،انہوں نے کہا کہ میاں صاحب نے سوات اور ڈی آئی خان میں بھی ایئرپورٹ بنانے کا اعلان کر دیاہے۔ میاں صاحب آپ اتنی دیر رہیں گے تو ایئرپورٹ بنے گا ،آپ تیسری دفعہ وزارت عظمیٰ پر ہیں لیکن ابھی تک آپ نے باری پوری نہیں کی۔

کے پی کے پولیس میں سیاسی بھرتیاں نہیں کی گئیں، میرٹ پر نوکریاں دی گئیں ہیں، گزشتہ تین سالوں میں پانچ ہزار کرپٹ پولیس اہلکاروں کو نوکریوں سے بر طرف کیا گیا۔

ہمیں کے پی کے کی پولیس پر فخر ہے، اس نے ایک دن میں سردار سورن سنگھ کے قاتلوں کو گرفتارکرلیا۔

انہوں نے نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ ملک کا مستقبل ہیں اور نیا پاکستان آپ نے ہی بنانا ہے، جو قومیں اپنے بچوں کو تعلیم نہیں دیتیں وہ کبھی ترقی نہیں کر سکتیں۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف تیس سال سے حکومت کر رہے ہیں پنجاب میں آپ نے کوئی ادارہ ٹھیک نہیں کیا ،عمران خان نے کہا کہ پنجاب پولیس سے چھوٹو گینگ نہیں سنبھل رہا، کے پی کے کی پولیس طالبان سے لڑ رہی ہے،ہم پولیس کی تنخواہوں میں مزید اضافہ کریں گے، ادارے تباہ کرنے والے ادارے ٹھیک نہیں کر سکتے۔

ان کا  کہنا تھا کہ پاکستان گلوبل وارمنگ سے متاثر ہونے والا آٹھواں ملک ہے ، ہم نے خیبر پختونخواہ میں ایک ارب درخت لگا نے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاناما لیکس کے حوالے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نوازشریف کو کرپشن کا جواب دینا پڑے گا، دوسروں پر الزام لگانے سے آپ بچ نہیں سکتے، اگر ہم کرپٹ ہیں تو آپ نے پکڑا کیوں نہیں ؟ ہماری حکومت آئی تو کرپشن کا پوچھیں گے نہیں بلکہ سیدھا جیل میں ڈالیں گے۔

وزیراعظم کے جلسوں پر شدید تنقید کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان انہیں نہیں بچا سکتے۔ کپتان نے دعویٰ کیا کہ ہم اگر تنہا بھی رہ گئے تو پاناما کے معاملے پر آخری حد تک جائیں گے۔

چیئرمین پی ٹی آئی کا کہناتھا کہ ہم نے اس ملک کے طاقت ور ڈاکوﺅں کا احتساب کرنا ہے ،دو سو ارب ڈالر پاکستانیوں کا پاکستان سے باہر پڑا ہواہے اگر وہ پیسہ پاکستان میں واپس آ جاتاہے تو ہمارے سارے قرضے اتر جائیں گے ۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ پیسہ لانے کیلئے ایسی لیڈر شپ چاہئیے جو کرپٹ نہ ہو ،نوازشریف کا اپنا پیسہ باہر پڑا ہے وہ کیسے چوری کا پیسہ پاکستان لائیں گے ،بیرون ملک میں پڑا پیسہ تحریک انصاف ملک میں واپس لائے گی۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں