عمران خان کا کرپٹ سیاستدانوں کو باکسرعامرخان کے حوالے کرنے کا اعلان
The news is by your side.

Advertisement

عمران خان کا کرپٹ سیاستدانوں کو باکسرعامرخان کے حوالے کرنے کا اعلان

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف سربراہ عمران خان کا کہنا ہے کہ چیف جسٹس کی سمت بالکل درست ہے، باکسر عامرخان کو پاکستان بلاؤں گا اور کرپٹ سیاستدانوں کو ان کے ساتھ رنگ میں ڈالوں گا۔

تفصیلات کے مطابق مانچسٹرمیں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے نمل یونیورسٹی کی فنڈ ریزنگ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کرپشن کے انسداد کا مؤثر نسخہ پیش کردیا اور کرپٹ سیاستدانوں کوباکسرعامرخان کے حوالے کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کرپٹ سیاستدانوں کو رنگ میں عامرخان کے حوالے کروں گا، 2 نہیں ایک پاکستان کا مطلب سمجھے، ہم سب کا نیا پاکستان بنانے کا وقت ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ بیرون ملک اسپتال کی بجائے میرے والد کا انتقال شوکت خانم میں ہوا، متعدد مرتبہ میں علیل ہواتوبھی شوکت خانم نےمیرا علاج کیا، اس کی وجہ یہ تھی اپنے ہاتھوں سے تعمیرکئے ادارے پر مجھے اعتماد تھا۔

سربراہ تحریک انصاف نے کہا کہ ایسی حکمرانی کا کیا فائدہ جس میں اپنے اداروں پراعتمادنہ کرسکیں، زکام بھی ہوتوجہازپکڑکرباہربھاگنےمیں عافیت سمجھی جاتی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ نمل کالج میں 92فیصدطلبہ مفت تعلیم حاصل کررہےہیں، انتہائی کم وقت میں نمل نےتعلیمی میدان میں اپنامقام بنایا، زرعی معیشت کے موضوع پرنمل نے بہترین جامعات سے الحاق کیا۔

چیف جسٹس کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ چیف جسٹس کی سمت بالکل درست ہے، چیف جسٹس عام آدمی کے مسائل سن رہے ہیں، چیف جسٹس کی پختونخوا آمد ہمارے لئے خوشی کا باعث ہے، چیف جسٹس نے پختونخواانتظامیہ کی تعریف کی۔

پی ٹی آئی چیئرمین کا کہنا تھا کہ پختونخوا میں افسرشاہی کی تقرریوں کی بنیاد اہلیت اورقابلیت ہے، اقتدار ملا تو اداروں کی اصلاح کیلئے اوورسیز پاکستانیوں سے خدمات لیں گے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل عمران خان نے الیکشن میں نیوٹرل کیئر ٹیکر حکومت کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا تھا پچھلی بار پی پی اورنون لیگ نے مک مکا کیا تھا، اس بار نیوٹرل کیئر ٹیکر کی ضرورت ہے، جو لوگ بکتے ہیں وہ اصل ایشو ہوتا ہے۔

کپتان کا کہناتھا اگر دیگر جماعتوں نے اپنے بکنے والے اراکین کے خلاف کارروائی نہ کی تو وہ ان کے نام منظر عام پر لے آئیں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں