رائیونڈ مارچ اور جلسہ 100 فیصد ہوگا، عمران خان -
The news is by your side.

Advertisement

رائیونڈ مارچ اور جلسہ 100 فیصد ہوگا، عمران خان

اسلام آباد : چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ کرپشن کے خلاف رائیونڈ مارچ اور جلسہ ضرور ہوگا تاہم اگر ہمیں  طاقت کے ذریعے روکنے کی کوشش کی گئی تو اس کی ذمہ دار مسلم لیگ ن خود ہوگی۔

Imran Khan says date for Raiwind March could be… by arynews

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد میں اپنی رہائش گاہ بنی گالہ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ کرپش ہے اور یہ ملک کو دیمک کی طرح چاٹ رہی ہے جس کی ہم گزشتہ 30 سالوں سے نشاندہی کررہے ہیں۔

پڑھیں:  عمران خان کا 24ستمبر کو رائے ونڈ کی طرف مارچ کا اعلان

 چیئرمین تحریک انصاف کا کہنا تھا کہ رائیونڈ مارچ اور جلسہ سو فیصد منعقد ہوگا اس کے لیے دیگر جماعتوں سے رابطے بھی شروع کردیئے گئے ہیں تاہم شرکت کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ اپوزیشن جماعتوں کا ہوگا جبکہ اگر اپوزیشن جماعتوں نے ساتھ نہیں دیا تو بھی پاکستان تحریک انصاف کرپشن کے خلاف اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔
اُن کا کہنا تھا کہ ’’اگر دیگر جماعتیں چاہیں تو رائیونڈ مارچ کی تاریخ میں ردوبدل ہوسکتا ہے مگر یہ مارچ محرم سے قبل ہوگا‘‘۔

مزید پڑھیں:  رائیونڈکسی کی جاگیر نہیں،لوگوں کو رائیونڈ لے کرجائیں گے، عمران خان

سربراہ پی ٹی آئی نے کہا کہ ’’کرپشن کے خلاف ملک بھر سے عوام کو اکٹھا کر کے رائیونڈ جائیں گے اور وہاں پر اپنے اگلے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے ۔حکومتی اراکین کی جانب سے آنے والی دھمکیوں کا مطلب ہے کہ وہ سب ہماری حکمت عملی سے گھبرائے ہوئے ہیں تاہم اب عوام ڈرنے والے نہیں ہیں کیونکہ اب سب کرپشن سے نجات حاصل کرنا چاہتے ہیں اور اگر حکومت نے ریلی یا جلسے کو روکنے کی کوشش کی تو پورا شہر بند کردیں گے جس کی ذمہ دار حکومت خود ہوگی‘‘۔

خبر پڑھیں:  عمران خان کا ایاز صادق کو اسپیکر ماننے سے انکار

 عمران خان نے کہا کہ ’’جب کوئی راستہ نہیں ہوتا تو سڑکوں پر آنا پڑتا ہے ، ہم نے پاناما لیکس کا معاملہ ہر سطح پر اٹھایا مگر ایوان میں بھی اسپیکر نے جانبداری دکھاتے ہوئے اربوں روپے کی کرپشن کرنے والے افراد کو کوئی ریفرنس نہیں بھیجا۔
انہوں نے کہا کہ ’’مجھے جو تقریر اسپیکر کے سامنے کرنی تھی وہی کل اسمبلی میں کی اب میں ایاز صادق کو اسپیکر اسمبلی تسلیم نہیں کرتا‘۔

پی ٹی آئی کے سربراہ نے کہا کہ ’’جب آصف علی زرداری ملک کے صدر تھے تو ایوانِ صدر کا گھیراؤ کیا گیا تاہم اب مسلم لیگ ن رائیونڈ مارچ پر دھمکیاں دے رہی ہے مگر ہم گھبرائیں گے نہیں اور وہاں جلسہ ضرور کریں گے۔

پنجاب پولیس پر تبصرہ کرتے ہوئے کپتان نے کہا کہ ’’پنجاب پولیس میں ایک عسکری ونگ ہے اگر مارچ کے دوران صوبائی حکومت نے پولیس کے ذریعے طاقت کا استعمال کیا صورتحال خراب ہوجائے گی‘‘۔

حکومت کے رویے پر تبصرہ کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ ’’جمہوری حکومت اور آمریت میں کوئی فرق نظر نہیں آتا، پرویز مشرف کے بعد سے آج تک کوئی ایسا ادارہ نہیں بنایا گیا جو خومختار اور آزاد ہو۔

 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں