The news is by your side.

Advertisement

پہلے 10 ارب کی پیشکش کی، بعد میں کیس کردیا: عمران خان

نتھیا گلی: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ ہم اسٹیٹس کو کے خلاف جہاد کر رہے ہیں۔ پہلے مجھے 10 ارب کی آفر کی اور بعد میں کیس کردیا۔ ایک میڈیا ہاؤس شریف خاندان کو بچانے میں لگا ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کچھ لوگ اسٹیٹس کو کے خلاف ہیں اور کچھ ساتھ کھڑے ہیں۔ ہم مافیا،اسٹیٹس کو اور کرپشن کے خلاف جہاد کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایک میڈیا ہاؤس شریف خاندان کو بچانے کے لیے پروپیگنڈا کر رہا ہے۔ ہم سیاست نہیں مافیا کے گاڈ فادر کے خلاف جدوجہد کر رہے ہیں۔ پاکستان میں 10 ارب ڈالر کی ہر سال منی لانڈرنگ ہوتی ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ آپ کا قصور یہ ہے کہ پاکستان سے پیسہ چوری کر کے باہر بھیجا۔ آپ نے منی لانڈرنگ کر کے بچوں کے نام پر جائیدایں خریدیں۔ اسحٰق ڈار نے تحریری طور پر کہا کہ سعید احمد خان کے ذریعے منی لانڈرنگ ہوتی تھی۔ کیا اس قسم کے ڈاکو اداروں کو مضبوط ہونے دیں گے۔ سپریم کورٹ نے بھی کہا کہ انہوں نے سارےادارے تباہ کر دیے ہیں۔ ملک کے وزیر اعظم ایسا کریں گے تو پاکستان کا مستقبل کیا ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ ایک طرف 10 ارب کی آفر دیتے ہیں اور دوسری طرف کیس کرتے ہیں۔ میرے پاس 10 ارب نہیں ہیں۔ یہ کیس جیت گئے تو ان کے بچوں سے قرضہ لوں گا۔

مزید پڑھیں: شہباز شریف کا عمران خان پر 10 ارب روپے ہرجانے کا مقدمہ

عمران خان نے کہا کہ کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ شریف خاندان کا احتساب ہوگا۔ ان کے چہرے دیکھ کر جے آئی ٹی میں جو کچھ ہو رہا ہے اس کا اندازہ ہوجاتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف نے خود اپنے بچوں کا نام لیا۔ قطری خط ریسکیو بنا لیکن اس کا کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ قطری شہزادہ معاہدوں کے لیے آجاتا ہے ان کو بچانے کے لیے نہیں آرہا۔ حسین نواز مے فیئر اپارٹمنٹس کے ثبوت پیش کیوں نہیں کر رہے۔ مے فیئر اپارٹمنٹ مریم نواز کی ملکیت ہیں اسی لیے ثبوت نہیں دکھائے جا رہے۔ ان اپارٹمنٹس کی ملکیت کے ثبوت سامنے لانے پر کیس ہی ختم ہوجائے گا۔


Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں