The news is by your side.

Advertisement

چوہدری نثار کو تحریک انصاف میں شمولیت کی دعوت دیں گے: عمران خان

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ چوہدری نثار کو تحریک انصاف میں شامل ہونے کی دعوت دیں گے، خوشی ہے انہوں نے مریم نواز کے خلاف اسٹینڈ لیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ پیسے والوں اور غریبوں کے لیے علاج کی سہولتیں الگ الگ ہیں۔ 29 اپریل کو بتائیں گے کہ طبقاتی نظام کیسے ختم کریں گے۔

عمران خان  نے کہا کہ اپوزیشن میں سیاست دان کی پکڑ ہوتی ہے جب کہ اقتدار میں‌ سارے کیس معاف ہوجاتے ہیں، پہلی بار ایک طاقتور وزیراعظم کا احتساب ایک معجزہ ہے، 29 اپریل کا جلسہ آدھا الیکشن ہے، 2018 کے انتخابات پاکستان کے مستقبل کی جنگ ہے۔

انہوں نے کہا کہ دو نہیں ایک پاکستان اور اصل پاکستان کی وضاحت کریں گے۔ ’مسئلہ یہ ہے کہ ارکان بکے اور یہ پارٹی کا معاملہ ہے۔ ہم نے 20 لوگوں کو موقع دیا ہے کہ کمیٹی میں آئیں۔ باقی پارٹیوں کا انتظار کر رہے ہیں وہ نام کب سامنے لاتے ہیں۔ سوال پوچھنے والے بتائیں کہ 30 سال لوگ کیوں بک رہے تھے‘۔

ان کا کہنا تھا کہ سب کو پتہ ہے کہ 30 سال سے خرید و فروخت چل رہی تھی۔ ’ہم تو شروع سے کہہ رہے ہیں اس نظام کو تبدیل کرنا ہوگا۔ سوال اٹھانے والے نظام کی تبدیلی کے لیے اقدامات کیوں نہیں کرتے‘۔

عمران خان نے کہا کہ مجھے ماضی میں سینیٹر شپ کے لیے 45 کروڑ روپے کی آفر کی گئی تھی۔ ’مجھے سینیٹ میں آفر آئی اس کا مطلب پارٹی سربراہ کو آفرز آتی رہی ہیں۔ کیا شاہد خاقان کو نہیں معلوم ان کی پارٹی بھی یہی کرتی آرہی ہے‘؟

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن نے بڑا ظلم کیا ہے۔ دونوں پارٹیوں نے فیصلہ کیا کہ نگراں حکومت یہ خود بنائیں گے۔ ’دونوں پارٹیوں نے فیصلہ کیا کہ چیئرمین نیب اور چیف جسٹس خود بنائیں گے، نگراں حکومت کا مقصد شفاف انتخابات ہوتے ہیں‘۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ شفاف الیکشن کروانا چاہتے ہیں تو یقینی نیوٹرل سیٹ اپ ہونا چاہیئے۔ چیف جسٹس خیبر پختونخواہ کا باقی صوبوں سے موازنہ کریں۔ چیف جسٹس شہریوں کی مشکلات کی نشاندہی کر کے اچھا کر رہے ہیں۔

مزید پڑھیں: مریم نواز کی سربراہی میں کام نہیں کرسکتا، چوہدری نثار


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں