The news is by your side.

Advertisement

سال کا پہلا مہینہ : اسٹریٹ کرائمز میں اضافہ، ڈکیتی مزاحمت پر 10 شہری جان سے گئے

کراچی : شہر قائد میں سال 2022 کے پہلے ماہ میں اسٹریٹ کرائمز کی شرح بڑھ گئی ، جنوری میں ڈکیتی مزاحمت پر 10 افرادجاں بحق اور 60 سے زائد زخمی ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق اے آر وائی نیوز نے جنوری میں رپورٹ اسٹریٹ کرائمز کے اعداد و شمار حاصل کرلیے، رواں سال کا پہلا ماہ کراچی کے شہریوں پر بجلی بن کر گرا۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ 31روز کے دوران صرف ڈکیتی مزاحمت پر 10 شہری جان سے گئے جبکہ ڈکیتی مزاحمت کی کوشش میں 60 سے زائد شہری زخمی ہوئے اورکروڑوں کی نقدی، سونااوردیگر سامان سے محروم ہوئے۔

جنوری میں 1972 شہریوں کے موبائل فونز ملزمان نے چھینے، 3115موٹرسائیکلیں چوری ہوئی اور 336 چھینی گئیں جبکہ 141گاڑیاں چوری اور 11 گاڑیاں چھینیں۔

اعداد و شمار کے مطابق مختلف اسپتالوں میں81 افراد جاں بحق، 140 زخمی لائے گئے ، ڈکیتی مزاحمت پرزخمی ہونے والوں میں 3 پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ ذاتی جھگڑے اور دشمنی میں 11 افراد جاں بحق 29 زخمی ہوئے جبکہ نامعلوم افراد کی فائرنگ سے 2 افراد جاں بحق 2 زخمی ہوئے۔

فائرنگ کے 2الگ واقعات میں 2 خواتین شوہر کے ہاتھوں قتل ہوئیں جبکہ اتفاقیہ گولیاں چلنے سے 1 شخص جاں بحق 10 زخمی ہوئے ، زخمی ہونے والوں میں 2 پولیس اہلکار بھی شامل ہیں۔

پتنگ سےگلاکٹ کر، جھلس کر اور دیگر واقعات میں 13 زخمی ہوئے جبکہ جنوری میں 4 خواتین سمیت 9 افراد نے خودکشی کی ، خودکشی کرنیوالوں میں پولیس اہلکار اور سیکیورٹی گارڈ بھی شامل ہیں۔

جنوری میں مختلف علاقوں سے 26 لاشیں ملی ہیں ، ملنے والی لاشوں میں سے کچھ کو شناخت کیا گیا، دیگر کا عمل جاری ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں