جنوبی وزیرستان میں اب ٹی ڈی پیز موجود نہیں‘ پارلیمانی سیکریٹری -
The news is by your side.

Advertisement

جنوبی وزیرستان میں اب ٹی ڈی پیز موجود نہیں‘ پارلیمانی سیکریٹری

اسلام آباد: پارلیمانی سیکریٹری رانا افضل نے کہا کہ جنوبی وزیرستان میں اب کوئی ٹی ڈی پیز موجود نہیں ہے،حکومت کی جانب سے عارضی بے گھر ہونے والوں کو مراعات نہیں دی جار ہیں.

تفصیلات کے مطابق اسپیکرسردارایازصادق کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا اجلاس معنقد ہوا، پارلیمانی سیکریٹری نے کہا کہ جنوبی وزیرستان میں اب کوئی ٹی ڈی پیز موجود نہیں ہے، دسمبر 2016 میں ٹی ڈی پیز کا مسئلہ ختم ہوچکا ہے، رانا افضل نے کہا کہ عارضی بے گھر ہونے والوں کو مراعات نہیں دی جارہیں.

مزید پڑھیں:آپریشن متاثرین کی واپسی میں تیزی, 17253خاندان گھروں کو روانہ

اس موقع پر وفاقی وزیر عبدالقادر بلوچ نے کہا کہ 80 فیصد آئی ڈی پیز واپس جا چکے ہیں، یہ مسئلہ صرف فاٹا کا نہیں بلوچستان کا بھی ہے، بلوچستان کابھی مطالبہ ہے آئی ڈی پیزکی واپسی تک مردم شماری نہ کی جائے.

مزید پڑھیں:ایف آئی اے/ نادرا جعلی شناختی کارڈز بنانے والوں کے خلاف سرگرم

نعیمہ کشور نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جنوبی وزیرستان کے 80 فیصد لوگوں کے شناختی کارڈز بلاک ہوئے ہیں۔

یاد رہے کہ تحریک طالبان پاکستان نے جنوبی وزیرستان میں‌ جنم لیا. پاکستان کی اکثرکالعدم تنظیموں کا مرکز بھی جنوبی وزیرستان ہی رہا ہے. اکتوبر 2009 میں پاک فوج نے دہشت گردوں کے خلاف “آپریشن راہ نجات “شروع کیا تھا.بعد ازاں آپریشن ضربِ عضب کے بعد وزیرستان کے جنوب میں‌ حالات بہتر ہوئے ہیں-

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں