site
stats
عالمی خبریں

مودی سرکار نے ذاکر نائیک کا پاسپورٹ منسوخ کردیا

ممبئی: بھارتی حکومت نے معروف اسلامی مبلغ اور اسلامک ریسرچ فاؤنڈیشن کے سربراہ ڈاکٹر ذاکرنائیک کا بھارتی پاسپورٹ منسوخ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق عالم اسلام کے مشہور مبلغ اور اسلامک ریسرچ فاؤنڈیشن کے سربراہ ڈاکٹر ذاکر نائیک جن کے ہاتھوں ہزاروں بھارتی ہندوؤں نے اسلام قبول کیا آج کل بین الااقوامی خبروں کا مرکز ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق مودی سرکار نے اپنے ایک تازہ اقدام میں معروف اسکالر ذاکرنائیک کے انڈین پاسپورٹ کو منسوخ کرتے ہوئے ملک میں داخلے پر پابندی لگا دی ہے، ڈاکٹر ذاکر نائیک اس وقت سعودی عرب میں مقیم ہیں۔

بھارت کے انسداد دہشت گردی ادارے کے ترجمان کے مطابق ڈاکٹر ذاکرنائیک کے پاسپورٹ کی منسوخی نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی کی درخواست پر کی گئی جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ ڈاکٹر ذاکر نائیک کے خطابات نوجوانوں کو دہشت گردی اور انتہا پسندی پر اکساتے ہیں۔

بھارتی حکومت کا کہنا ہے کہ ذاکر نائیک کو تحقیقات کے لیے کئی نوٹس بھیجے گئے لیکن وہ پیش نہ ہوئے، ملزم کی مسلسل عدم حاضری کی بنیاد پر اُن کا بھارتی پاسپورٹ منسوخ کیا گیا۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس بنگلہ دیش میں واقع ایک کیفے میں 2 حملہ آوروں نے حملہ کیا تھا جس کے بعد کیس کی تحقیقات میں مبینہ طور پر یہ بات سامنے آئی تھی کہ دونوں دہشت گرد ذاکر نائیک کے خطابات سے متاثر تھے۔

قبل ازیں بھارت نے ڈاکٹر ذاکر نائیک کے ادارے پر الزامات عائد کیے تھے کہ اسلامک ریسرچ سینٹر سے ہونے والی تقاریر سے شدت پسند پیدا ہورہے ہیں جس کے بعد اس ادارے پر 5 سال کی پابندی عائد کرتے ہوئے مبلغ ذاکر نائیک پر بھی پانچ سال کی پابندی عائد کی گئی تھی۔

بھارتی حکومت کی مسلمان دشمن پالیسیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے ذاکر نائیک نے سعودی عرب میں سکونت اختیار کی تاہم بعد ازاں سعودی حکومت کی جانب سے ذاکر نائیک کو مستقل سعودی شہریت دے دی گئی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top