The news is by your side.

Advertisement

بھارت: معذور خاتون کو ہوٹل میں داخل نہیں ہونے دیا

گروگرام میں ایک معذور خاتون کومشہور ریستوران میں داخل ہونے سے یہ کہہ کر روک دیا گیا کہ اس کی وہیل چیئر سے دوسرے گاہک پریشان ہونگے۔

یہ واقعہ سریشٹی پانڈے نامی خاتون کے ساتھ پیش آیا جس کی تفصیل انہوں نے اپنے ایک ٹوئٹ میں بیان کی ہے۔

چلنے پھرنے سے معذور سرشٹی پانڈے نے ٹوئٹ میں لکھا کہ میں اپنے دوست اور اہلخانہ کے ہمراہ سائبرہب کے گڑگاؤں گئے اور چار لوگوں کے لیے ایک ٹیبل بک کرنے کا کہا لیکن منیجر نے پہلے دو بار ہمیں نظرانداز کیا بعد میں اس نے کہا کہ وہیل چیئر اندر نہیں جاسکتی کیونکہ اس سے دوسرے گاہک پریشان ہوں گے۔

خاتون نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ یہ سن کر مجھے بہت صدمہ ہوا اور میں نے اس کے بعد ایک لفظ بھی ںہیں کہا۔ خاتون کا کہنا تھا کہ یہ اس کے ساتھ پہلی بار نہیں ہوا اسے اسکولوں اور تعلیمی اداروں اور دیگر بہت سی جگہوں پر عمومی طور پر داخلے سے منع کیا گیا لیکن اتنی اچھی جگہ پر اتنے برے رویے کی توقع نہیں تھی، لوگوں کے اس رویے سے لگتا ہے کہ کوئی مجھے بالکل نہیں چاہتا۔

دوسری جانب گروگرام کے ڈی ایل ایف سائبر ہب میں واقع ریسٹورنٹ نے مذکورہ واقعے پر معافی مانگی ہے اور کہا ہے کہ وہ اپنے ملازمین کے لیے ‘‘رحمدلی کے جذبات بڑھانے’’ کے اندرونی طور پر اقدامات کررہے ہیں۔

راستا ریسٹورنٹ کے بانی پارٹنر گوتمیش سنگھ نے اپنی ایک پوسٹ میں کہا کہ ہمیں جمعے کی شام راستا گڑگاؤں میں پیش آنے والے واقعے پر بہت افسوس ہے۔ ہم سب کو ساتھ لے کر چلنا چاہتے ہیں اور کبھی یہ نہیں چاہیں گے کہ کوئی ہماری وجہ سے خود کو تنہا محسوس کرے، ہم پہلے ہی واقعے کے متاثرین تک پہنچ کر ان سے معافی مانگ چکے ہیں، ہم آئندہ ایسے واقعات کی روک تھام کے لیے اپنے ملازمین کی تربیت کررہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں