The news is by your side.

Advertisement

معروف بھارتی ڈوسا کنگ قتل کے جرم میں قید

سروانا بھون نامی بین الاقوامی ریستورانٹس مالک راج گوپال پر ملازم کو قتل کرکے اہلیہ سے شادی کا الزام تھا

نئی دہلی : بھارت میں ڈوسا کنگ کے نام سے مشہور کاروباری شخصیت راج گوپال نے اپنے ایک ملازم کی بیوی سے شادی کرنے کےلئے ملازم کا قتل کرا دیا۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق سروانا بھون نامی بین الاقوامی ریستورانٹس کے مالک 71 سالہ راج گوپال اپنے ایک ملازم کی بیوی سے شادی کرنا چاہتے تھے، انہیں ایسا کرنے کےلئے ایک نجومی نے کہا تھاکہ راج گوپال کے اعصاب پر ان کے ملازم کی بیوی سوار ہو گئی تھی، شادی کا راستہ آسان بنانے کےلئے راج نے 2001 میں ملازم کو قتل کرادیا۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ متاثرہ خاتون نے اپنے شوہر کے لاپتہ ہونے پر پولیس سے رابطہ کیا اور راج گوپال کےخلاف رپورٹ بھی درج کروائی تھی، پولیس کے مطابق ان کے شوہر کی لاش ایک جنگل سے ملی اور پولیس نے اس بات کی تصدیق بھی کی کہ انہیں گلا گھونٹ کر قتل کیا گیا تھا۔

بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ ڈوسا کنگ راج گوپال 2003ءمیں بھی اسی سلسلے کے ایک اسکینڈل میں ملوث تھے جس میں انہوں نے اسی عورت (ملازم کی بیوی) کو رشوت دینے کی کوشش کی تھی جس پر خاتون کی فیملی کو ڈرانے دھمکانے کی کوشش اور اس کے بھائی پر تشدد بھی شامل تھا۔

میڈیاذرائع کے مطابق ملازم کے قتل اور اس کی بیوی کو ڈرانے اور دھمکانے والے راج گوپال کو 2004ءمیں مقامی عدالت نے دس سال قید کی سزا سنائی مگر بعد میں چنئی ہائی کورٹ نے ان کی سزا کو عمر قید میں بدل دیا تھا۔

خبر رساں ذرائع سے معلوم ہوا کہ 2009ءمیں مجرم قرار پائے جانے کے بعدراج گوپال عمر قید سے بچنے کی کوششیں کر رہے تھے، گزشتہ روز جب ان کی آخری اپیل مسترد ہوگئی تو انہوں نے خود کو چنئی کی عدالت کے حوالے کر دیا جبکہ قتل کے جرم میں عمر قید سے بچنے کی آخری اپیل بھی ناکام ہو گئی۔

واضح رہے کہ سروانا بھون کے بھارت میں 39 اور نیویارک، لندن اور سڈنی سمیت دیگر ممالک و شہروں میں 43 ریستورانٹس ہیں، رپورٹ کے مطابق سنہ 2017 میں سروانا بھون کی آمدنی 29 ارب سے زائد تھی۔

بھارتی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ اپنے ریستورانٹس میں جنوبی بھارت کی معروف ڈش ڈوسا متعارف کرنے کے حوالے سے راج گوپال کو ڈوسا کنگ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں