The news is by your side.

Advertisement

امتحان میں شرکت کرنی ہے تو حجاب اتارنا پڑے گا

بھارت میں مسلمان طالبہ کو امتحان میں شرکت سے روک دیا

نئی دہلی : بھارت میں متعصب انتظامیہ نے مسلمان طالبہ کو حجاب کرنے کی پاداش میں کمرہ امتحان میں داخل ہونے سے روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں نسل پرست انتظامیہ کی جانب مسلمان طالب علموں کے ساتھ متعصبانہ رویہ اختیار کرکے انہیں تعلیم کے حصول سے بھی روکا جارہا ہے۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا ک بھارتی دارالحکومت نئی دہلی کی جامعہ اسلامیہ یورنیورسٹی سے ایم بی اے کی تعلیم حاصل کرنے والی طالبہ کو حجاب کے باعث امتحان میں شرکت سے روک دیا گیا۔

اسلامیہ یونیورسٹی کی طالبہ امیہ خان کا کہنا ہے کہ انہیں حجاب کی وجہ سے اہلیت کے امتحان (نیشنل الیجی بلٹی ٹیسٹ) میں شرکت کرنے سے روکا گیا ہے۔

متاثرہ طالبہ نے میڈیا کو بتایا کہ میں گذشتہ ہفتے روہنی میں این ای ٹی کا امتحان دینے گئی تھی، مجھے امتحانی مرکز میں داخل ہونے کی اجازت مل گئی تاہم حجاب کی پاداش میں کمرہ امتحان میں داخل نہیں ہونے دیا گیا۔

امیہ خان نے بتایا کہ مجھے انتظامیہ کی جانب سے حجاب اتارکر امتحان میں شرکت کو کہا گیا، میں نے اپنا امتحانی کارڈ دکھایا، شناخت کروائی تاہم انہوں نے مجھے امتحان کی اجازت نہیں دی۔

بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ متاثرہ طالبہ نے امتحان کا انعقاد کرنے والے ادارے یونیورسٹی گرانٹ کمیشن کو امتحان لینے والی انتظامیہ کے متعصبانہ رویے کے حوالے سے ای میل ارسال کی ہے۔

امیہ خان کا کہنا تھا کہ اگر ادارے کی جانب سے میری ای میل کا کوئی جواب نہیں دیا گیا تو میں قانونی کارروائی کروں گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں