The news is by your side.

Advertisement

بھارت نے دریائے ستلج میں پانی چھوڑ دیا، سیلاب کا خطرہ

لاہور: بھارت نے دریائے ستلج میں بغیر اطلاع پانی چھوڑ دیا جس کے نتیجے میں سیلاب کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق دریائے ستلج میں بھارتی پنجاب سے آنے والے ریلے سے سیلاب کا خطرہ ہے، این ڈی ایم اے نے وارننگ جاری کردی ہے، اداروں کو ہائی الرٹ رہنے کی ہدایت کردی گئی۔

رپورٹ کے مطابق 12 سے 24 گھنٹوں میں پانی گنڈا سنگھ والا کے مقام پر پاکستان میں داخل ہوگا، ڈیڑھ سے 2 لاکھ کیوسک پانی پاکستانی حدود میں داخل ہوسکتا ہے۔

بھارت نے لداخ ڈیم کے 5 میں سے 3 اسپل ویز کھول دئیے ہیں، پی ڈی ایم اے پنجاب، قصور اور دریائے سندھ کے اطراف انتظامیہ کو الرٹ کردیا گیا ہے۔

ترجمان این ڈی ایم اے کے مطابق پانی خرمنگ کے مقام پر دریائے سندھ میں شامل ہوگا، بھارت نے سرکاری طور پر ابھی تک اطلاع نہیں دی ہے۔

مزید پڑھیں: بھارت کا دریائے چناب کے بعد دریائے جہلم میں پانی چھوڑنے کا خدشہ

محکمہ موسمیات نے بھی دریائے ستلج میں پانی کی سطح بلند ہونے کی پیش گوئی کی ہے تاہم سیلاب سے متعلق کوئی وارننگ جاری نہیں کی گئی ہے۔

اطلاعات ہیں کہ دریائے ستلج میں 1988 کے بعد یہ ایک بڑا سیلاب ہوگا جس سے ہزاروں ایکڑ زمین اور سیکڑوں دیہات متاثر ہوسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ بھارت کی جانب سے دریائے جہلم میں بھی پانی چھوڑا جارہا ہے، مظفرآباد آزاد کشمیر کی انتظامیہ نے اس سلسلے میں الرٹ جاری کردیا ہے۔

گزشتہ روز بھارت نے آبی دہشت گردی کرتے ہوئے دریائے چناب میں پانی چھوڑ دیا تھا، جس کے باعث دریائے چناب میں درمیانے درجے کا سیلاب آیا۔

فلڈ فار کاسٹنگ ڈویژن کے ترجمان کا کہنا تھا کہ دس گھنٹے کے دوران ہیڈ مرالہ کے مقام پر پانی کی آمد میں ایک لاکھ کیوسک اضافہ ہوا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں