The news is by your side.

بھارت: توہین آمیز بیان منظرِ عام پر لانے والا صحافی ضمانت کے باجود گرفتار

نئی دہلی: بھارت میں توہین آمیز بیان منظرِ عام پر لانے والے صحافی کو ضمانت کے باجود گرفتار کر لیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق مودی سرکار نے انتہا پسندی کی انتہا کر دی ہے، بی جے پی اراکین کے توہین آمیز بیان منظرِ عام پر لانے والے صحافی کو ضمانت کے باجود گرفتار کر لیا گیا۔

محمد زبیر کے خلاف ہندو انتہا پسندوں کے دعوے جھٹلانے پر مقدمات درج تھے، تفتیش کے لیے مختلف کیسز میں بلایا گیا، تاہم حکام نے مذہبی منافرت پھیلانے کے الزام میں مقدمہ درج کر کے گرفتاری ڈال دی۔

الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے کے مصداق محمد زبیر کو دہلی پولیس نے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے الزام میں گرفتار کیا، جس پر کانگریس لیڈر راہُل گاندھی اور ششی تھرور نے مذمت کی ہے۔

کانگریس لیڈر راہُل گاندھی نے ڈرو مت کے ہیش ٹیگ کے ساتھ ٹویٹ کیا کہ بی جے پی کے جھوٹ، تعصب اور نفرت کو بے نقاب کرنے والا ہر شخص ان کے لیے خطرہ ہے۔

انھوں نے لکھا کہ حق کی ایک آواز کو گرفتار کرنے سے ہزاروں مزید آوازیں اٹھیں گی، ظلم پر ہمیشہ سچائی کی فتح ہوتی ہے۔

بھارت کے سابق نائب وزیر خارجہ ششی تھرور نے بھی شدید ردِ عمل ظاہر کرتے ہوئے اس اقدام کو سچ پر حملہ قرار دیتے ہوئے محمد زبیر کی فوری رہائی کا مطالبہ کر دیا۔

واضع رہے صحافی محمد زبیر نے بی جے پی کی رکن نوپور شرما کا توہین آمیز بیان ٹویٹر پر شئیر کیا تھا، دوسری جانب مسلمان صحافی رعان ایوب کا ٹویٹر اکاؤنٹ بھارت میں بند کر دیا گیا ہے، گجرات فسادات میں مودی کے احتساب کا مطالبہ کرنے والی خاتون کو بھی پولیس نے حراست میں لے لیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں