The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں دو لڑکیوں پر سفاکانہ تشدد : دیکھنے والے بھی رو پڑے

نئی دہلی : بھارت میں خواتین پر تشدد کے واقعات دن بہ دن بڑھتے جا رہے ہیں، رشتے کے بھائیوں نے شک کی بنیاد پر الزام لگا کر دو لڑکیوں کو انتہائی سفاکانہ طریقے سے مارا کہ دیکھنے والے بھی روپڑے۔

بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کی ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے جس میں دو نوجوان لڑکیوں کے ساتھ ظلم کی تمام حدیں پار کردی گئیں۔ ویڈیو میں نظر آنے والے افراد لڑکیوں کو لاٹھی اور ڈنڈوں سے بری مار رہے ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق مذکورہ واقعہ ٹنڈا پولیس اسٹیشن کے پیپلوا گاؤں میں پیش آیا ہے، بتایا جارہا ہے کہ لڑکیوں کو مارنے والے رشتے میں ان کے کزن تھے۔

انسانیت اس وقت اور زیادہ شرمسار ہوگئی جب اس وقت موقع پر موجود لوگوں نے اس واقعے کی ویڈیو بناتے رہے لیکن ان کو بچانے کی کسی نے بھی کوشش نہیں کی، ایسا محسوس ہورہا ہے کہ جیسے کسی کے دل میں قانون کا کوئی خوف ہی نہیں ہے۔

لڑکیاں درد سے چیختی رہیں اور رحم کی بھیک مانگتی رہیں لیکن حیوان جیسے ان انسان نما درندوں کے دل ذرا بھی نہیں نرم پڑے اور بے رحم لوگ انہیں لاٹھیوں سے پیٹتے رہے۔ ویڈیو میں لڑکیوں کو نہ صرف نوجوانوں زد و کوب کر رہے ہیں بلکہ خواتین بھی ڈنڈے مار رہی ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ویڈیو کچھ دن پرانی ہے۔ پولیس کے مطابق لڑکیوں کا الزام ہے کہ وہاں موجود لوگ اسکول کے قریب ہی ان کو روک کر پوچھنے لگے کہ آپ دونوں ماموں کے دو لڑکوں سے فون پر بات کیوں کرتی ہیں؟ جس کے بعد لڑکیوں پر لاٹھی سے مارنا شروع کردیا۔

مشتعل لوگوں نے لڑکیوں کو صرف فون پر بات کرنے کے الزام میں بری طرح زد و کوب کیا اور ہنگامہ بھی کھڑا کردیا۔ واقعے کے بعد دونوں لڑکیاں اس قدر خوفزدہ ہوگئیں کہ انہوں نے تھانے شکایت تک درج نہیں کرائی۔

بعد ازاں سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پولیس بھی حرکت میں آگئی پولیس اہلکاروں نے معاملہ کا نوٹس لیتے ہوئے جائے واردات کا معائنہ کیا اور لڑکیوں کو پولیس اسٹیشن لایا گیا جہاں تفتیش پر لڑکیوں نے بتایا کہ گھر والوں نے ان پر تشدد کیا ہے۔

پولیس نے 7 افراد کے خلاف مقدمہ درج کرکے انہیں گرفتار بھی کر لیا ہے۔ اس سے قبل بھی ریاست کے علی راج پور میں ایک خاتون کو زدوکوب کرنے کا واقعہ سامنے آیا تھا۔ جہاں ایک شادی شدہ عورت کو اس کے والد اور تین بھائیوں نے سرعام زد کوب کیا تھا کیونکہ وہ بغیر بتائے کسی رشتہ دار کے گھر گئی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں