The news is by your side.

Advertisement

بھارت سفارت کاری سے پاکستان کو تنہا کرنا چاہتا ہے، شاہ محمود قریشی

بھارت میں الیکشن تک اتار چڑھاؤ دکھائی دے گا، جارحیت کی گئی تو دفاع کریں گے

ملتان : وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ بھارت 26 فروری کو پاکستان پر جارحیت کرنا چاہتا تھا وہی بھارت ایک ماہ کے اندر خیر سگالی کا پیغام بھیج رہا ہے یہ تبدیلی نہیں تو آور کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے پہلے بھی امن کو ترجیح دی تھی آگے بھی دے گا، جارحیت کی گئی تو پہلے بھی دفاع کیا آگے بھی کریں گے۔

بھارت کا مؤقف ہے کہ آئیے مل کر غربت کا خاتمہ کریں، 26 جولائی کو عمران خان کا بھی یہی پیغام تھا آؤ مل بیٹھ کر مسئلے حل کریں۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ لگتا ہے بھارت میں الیکشن تک اتار چڑھاؤ دکھائی دے گا، جارحیت کی گئی تو پہلے بھی دفاع کیا آگے بھی کریں گے، بھارت بہت سے معاملات کو سیکیورٹی کونسل میں لے جانا چاہتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارت سفارت کاری سے پاکستان کو تنہا کرنے کی کوشش کررہا ہے، بھارت پاکستان کو گرے سے بلیک لسٹ میں ڈلوانے کی کوشش کررہا ہے ان حالات میں پاکستان کا یکجا ہونا ضروری ہے۔

بھارت کا مؤقف ہے کہ آئیے مل کر غربت کا خاتمہ کریں، 26 جولائی کو عمران خان کا بھی یہی پیغام تھا آؤ مل بیٹھ کر مسئلے حل کریں۔

شاہ محمود قریشی وزیر خارجہ

وزیر خارجہ نے دورہ چین سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چین پاکستان کا ہر آڑے وقت میں ساتھ دیتا آیا ہے، چین کل بھی ساتھ تھا اور آج بھی پاکستان کے ساتھ ہے، چین نے مختلف فورمز پر اپنا کردار ادا کیا۔

چین پاکستان کی ضروریات کو اہمیت دیتا ہے اور دیتا رہے گا، چین ہمارا دوست ہے ان سے نشست سود مند رہی، معاملات پر چین سے مشاورت جاری رہتی ہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کرائسٹ چرچ میں دہشت نے خون کی ہولی کھیلی اور اسے لائیو نشر کیا، حملہ آور نے دنیا کو پیغام دینے کےلیے کیمرے سے کارروائی کی۔

کرائسٹ چرچ حملے پر ترکی، پاکستان نے ہنگامی اجلاس کا فیصلہ کیا، اجلاس میں 6 سفارشات مرتب کیں، 4 سفارشات میں نے تقریر میں پیش کی تھیں۔

وفاقی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ اسلام فوبیا کی کوشش ناکام ہوئی، او آئی سی اجلاس کامیاب رہا۔

مزید پڑھیں : اسلاموفوبیا کے خلاف متحدہ محاذ تشکیل دینے کی ضرورت ہے، شاہ محمود قریشی

یاد رہے کہ ایک روز قبل  پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اوآئی سی کے ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ سانحہ نیوزی لینڈ مغرب میں د ر آنے والی اسلامو فوبیا لہر کا غماز ہے، اسلاموفوبیا کے خلاف متحدہ محاذ تشکیل دینے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ 50معصوم انسان شہیدہوئے،9شہداکاتعلق پاکستان سے ہے،پاکستان کےبہادرثپوت ندیم رشیدنےکئی انسانوں کی جان بچائی،نعیم رشیدشہیدکی بہادری پرحکومت نےاعلیٰ سول اعزازعطاکرنے کا اعلان کیا ہے۔دیگرپاکستانیوں نےبھی اسی سانحےمیں جام شہادت نوش کیا، یہ تمام افراداپنی برادری میں عزت ووقارکی علامت تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں